یوم یکجہتی افواج پاکستان 11-2019 - ھفت روزہ اھل حدیث

Breaking

Sunday, July 14, 2019

یوم یکجہتی افواج پاکستان 11-2019


خطبات جمعہ ... یوم یکجہتی مسلح افواج پاکستان

داعی امن‘ سفیرختم نبوت امیر محترم سینیٹر پروفیسر جناب ساجد میر صاحب اور محترم مولانا قاری محمدحنیف ربانی صاحب امیر ضلع گوجرانوالہ کے حکم پر ضلع بھرمیں یکم مارچ کا خطبہ جمعۃ المبارک مسلح افواج پاکستا ن کی قربانیوں کو خراج عقیدت پیش کرنے اور غازیوں کو خراج تحسین پیش کرنے کے لیے پاک فوج زندہ باد کے طور پر دیا گیا۔ تفصیلات کے مطابق ضلع بھر میں مسلح افواج پاکستان کی قربانیوں کو خراج عقیدت اور شھداء ، غازیوں کی خدمات کو خراج تحسین پیش کرنے کے سلسلہ میں یکم مارچ جمعۃ المبارک ’’یوم یکجہتی مسلح افواج پاکستان‘‘ کے طور پر منایا گیا۔
شیر ربانی قاری محمد حنیف ربانی امیر ضلع گوجرانوالہ نے احباب جماعت سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستانی وزیر اعظم نے الیکشن میں کامیابی کے حصول کی خاطر جوجنگ کا سماں باندھ رکھا ہے اس میں وہ ہر گز کامیاب نہیں ہو سکتا۔ بی جے پی ہو یا کانگریس یا کوئی اور ہندوستانی سیاسی و انتہاء پسند جماعت ہو،کسی سے بھی یہ امید نہیں رکھنی چاہیے کہ وہ پاکستان کے خیر خواہ ہیں۔ پاکستان و ہندوستا ن کے مابین تنازعہ کی اصل وجہ کشمیر ہے، لیکن یہ بات قابل غور ہے کہ سرحدوں پر کشیدگی کشمیر کے تنازعہ پر شروع ہوتی ہے ،لیکن جب حالات سنگین ہوتے ہیں تو تنازعہ کشمیر پیچھے رہ جاتا ہے اور کشمیری اپنی جان،مال اور املاک کا مزید نقصان کروا بیٹھتے ہیں اور امن کی بات شرو ع کرکے کشمیر کا مسئلہ پھرپیچھے رہ جاتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر کا تنازعہ حل کرنا چاہے ،کشمیری عوام کوئی ایسا حل قبول نہیں کریں گے جس میں انہیں پاکستان سے دور کیا جائے۔ کشمیریوں کی نسل کشی کا ہندوستانی خواب ہرگز پورا نہیں ہوگا۔ اس وقت وادی کشمیر میں آٹھ لاکھ ہندوستانی وحشی فوج ظلم و بربریت کی نئی داستان رقم کر رہی ہے اور کشمیریوں پر ایام زندگی تنگ کیے ہوئے ہے، کشمیر میں حریت قیادت پابند سلاسل ہے، نوجوان اپنے مستقبل اور سہانے خواب پاکستان، آزادی کشمیر سے منصوب کرچکے ہیں ، ایسے میں کشمیر کے تنازعہ پر معذرت خواہانہ رویہ کسی بھی صورت میں درست نہیں، انہوں نے کہا کہ او، آئی، سی نے ہندوستان کو بحیثیت مبصر اجلاس میں دعوت دے کر پاکستان و کشمیریوں کے مؤقف پر یو ٹرن لیا ہے، جس سے او آئی سی کے کردار پر سوالیہ نشان اٹھ رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ دنوں سے ہندوستانی افواج نے وطن عزیز پاکستان پر جو جارحیت مسلط کی ہوئی ہے، اس کا مسلح افواج پاکستان نے منہ توڑ جواب دیا ہے، جو کہ قابل فخر و تحسین ہے ۔ ہمیں اپنی بہادر افواج کی پیشہ ورانہ صلاحیتوں پر فخر ہے ہم پر امید ہیں کہ مسلح افواج پاکستان وطن عزیز کے دفاع کے لیے ہر وقت چوکس و دشمن کے ہر وار کا بھر پور جواب دینے کی صلاحیت رکھتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستانی جہازوں کا پاک فضائیہ کی جانب سے گرانا اور پوری قوم کی طرف سے بہترین رد عمل آنا یقینا ہماری پاک افواج پرمکمل اعتماد کا مظہر ہے ۔ قاری محمد حنیف ربانی نے خطبہ جمعہ میں کہا کہ سرزمین پاکستان و آزاد کشمیر کے عوام خوش قسمت ہیں کہ ان کی محافظ دنیا کی بہترین فوج ہے اور مسلح افواج پاکستان دشمن کی کسی بھی جارحیت کا مقابلہ کرنے کی بھر پور صلاحیت رکھتی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ جنگ کسی بھی تنازعہ کا حل نہیں ہوا کرتی،لیکن مذاکرات کے نام پر معذرت خوانہ رویہ بھی ہمیں ہر گز نہیں اپنانا چاہیے ،ہندوستان کے ساتھ بامقصد مذاکرات ضرور کیے جائیں، مگر وہ مذاکرات کے نام پر وقت کا ضیاع اور دھوکہ دہی کر کے غائب ہو جاتے ہیں اور ہندوستان سے مذاکرات کشمیر کے مدعا پر کیے جائیں اور اس کے علاوہ کوئی ایجنڈا نہیں ہونا چاہیے۔
حافظ محمد عثمان شاکر ناظم ضلع گوجرانوالہ نے کہا کہ ہماری بہادر مسلح افواج پاکستان نے ہندوستان کا غرور خاک میں ملا دیا ہے اور مسلح افواج نے یہ بات ثابت کی ہے کہ میدان جہاد میں عددی برتری نہیں بلکہ جذبہ ایمانی کام آتا ہے اور مسلح افواج پاکستان مبارک باد کی مستحق ہے۔ قاری عصمت اللہ ظہیر ناظم مالیات نے اپنے خطاب میں کہا کہ ہندوستان کی گولہ باری سے اس وقت لائن آف کنٹرول پر بسنے والے ہزاروں اہل وطن کا نظام زندگی مفلوج ہو چکا ہے ،ہندوستان نے اس قوم کو للکارا ہے ،جو میدان جنگ میں مر جائیں تو شہید کہلوانا پسند کرتے ہیں اور اگر زندہ لوٹ آئیں تو غازی کی حیثیت سے اپنا لوہا منوانے کی مزید جستجو میں مگن ہو جاتے ہیں۔ پاک فوج نے ہندوستانی جارحیت کا منہ توڑجواب دے کر پوری قوم کا سر فخر سے بلند کردیاہے۔
قاری محمد حنیف ربانی امیر ضلع مرکزی جمعیت اہل حدیث گوجرانوالہ کی اپیل پر ’’یوم پاک فوج زندہ باد‘‘ کے سلسلہ میں ضلع بھر میں کابینہ کے ارکان بالخصوص استادالعلماء پروفیسر عبدالستار حامد امیر پنجاب۔ مولانا محمدحسین مدنی۔قاری نصیر عثمانی۔حافظ عتیق الرحمان طاہر۔حافظ ابوسفیان سلفی۔ حافظ محمد عمران ربانی۔ حافظ محمدسرفراز نجمی، حافظ محمدآصف ندیم۔ حافظ محمد انور ظہیر۔ مولانا عبدالقدیر سلفی۔ حافظ فہیم الرحمان سیف۔ مولانا محمد ابراہیم محمدی۔ حافظ محمد احمد۔ پروفیسر حامد الرحمان۔ مولانا محمد نوید محمدی، قاری شھباز احمد سلفی، سید مدثر حسین شاہ۔ مولانا عبدالعلیم یزمانی۔ حافظ عبدالرؤف۔ مولانا انعام اللہ کیلانی۔ مولانا محمد طفیل بھٹوی، مولانامحمدعباس انجم۔ رانا عبدالجبار۔ صاحبزادہ داؤدضیاء۔ حافظ شھباز احمد۔ مولانا حکیم احسان اللہ ضیاء۔ حافظ عبدالرزاق، قاری محمد تنویر قمر، مولانا محمد یاسر۔ سید محمد مصطفی جعفر۔ ڈاکٹر محمد یعقوب، سید محمد بلال طاھر، محمد اسماعیل مجاہد۔ مولانا احمدنواز ہزاروی۔ قاری محمد ارشدسلفی،عبدالغنی محمدی، احسان اللہ گورائیہ، قاری مشتاق احمد، سید شاہ فیصل، مولانا محمد بنیامین، سید خالد محمود ترمذی، مولانا محمد مرتضی یزدانی، مولانا مظفر ورک، عبدالقیوم مدنی، مولانا عبدالستار فرقانی، مولانا محمد عامر ندیم۔ حافظ محمد شاھد شبیر سمیت تمام علمائے حق نے ضلع بھر کی مساجد اہل حدیث میں مسلح افواج پاکستان کی قربانیوں کو سراہا اور اس عزم کا اظہار کیا کہ مرکز ی جمعیت اہل حدیث پاکستان اپنی شیر دل مسلح افواج پاکستان کے شانہ بشانہ کھڑی ہے۔ اس موقع پر استحکا م پاکستان و مسلح افواج پاکستان کی استقامت اور مقبوضہ کشمیر کے مسلمانوں کی آزادی کے لیے دعائیں بھی کی گئیں۔  


No comments:

Post a Comment