اخبار الجماعت 12-2019 - ھفت روزہ اھل حدیث

Breaking

Sunday, July 14, 2019

اخبار الجماعت 12-2019


اخبار الجماعہ

نیشنل ایکشن پلان کی آڑ میں مدارس اور مذہبی طبقہ کو نشانہ بنانے کی بھر پور مزاحمت کریں گے
لا دین عناصر‘ اسلام وپاکستان دشمن لابی ملک میں سرگرم عمل ہے۔ امیر محترم کا گذشتہ روز مرکزی جمعیت اہل حدیث فیصل آباد کے ڈویژنل اجلاس سے خطاب
فیصل آباد (سٹاف رپورٹر) مرکزی جمعیت اہلحدیث پاکستان کے امیر سینیٹر پروفیسر ساجد میر نے کہا ہے کہ ختم نبوتؐ کا تحفظ اور ناموس رسالتؐ کی پاسداری کی ہے اور کرتے رہیں گے۔ نیشنل ایکشن پلان کی آڑ میں مدارس اور مذہبی طبقہ کو نشانہ بنانے کی بھرپور مزاحمت کریں گے۔ لادین عناصر، اسلام و پاکستان دشمن لابی ملک میں سرگرم عمل ہے۔ گزشتہ روز مرکزی جمعیت اہلحدیث فیصل آباد ڈویژن کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ دراصل ہماری جماعت خالصتاً دعوتی کام کرتی ہے۔ مولانا علی محمد ابو تراب نے کہا کہ مرکزی جمعیت اہلحدیث پاکستان نہ صرف مذہبی بلکہ رفاہی و فلاحی اور سیاسی جماعت ہے جس کی خدمات نہ صرف ملکی بلکہ بین الاقوامی طور پر بھی تسلیم کی جا چکی ہیں۔ پروفیسر عبدالستار حامد نے کہا کہ مرکزی جمعیت اہلحدیث نے ہمیشہ دہشت گردی اور فرقہ واریت کی مخالفت کی ہے۔ یہ ایک ناسور ہے جس کو اکھاڑنے کے لئے ہماری جماعت نے ہر دور میں کلیدی کردار ادا کیا ہے۔ مولانا عبدالرشید حجازی نے کہا کہ اسلام امن و سلامتی اور اتفاق و اتحاد کا درس دیتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ ہمارے اکابر اسلاف ہمیشہ ملکی وقاراور استحکام کیلئے بے خوف و بے لوث خدمات انجام دیتے رہے۔ ڈاکٹر عبدالغفور راشدنے کہا کہ مرکزی جمعیت اہلحدیث اور اس کی ذیلی تمام تنظیمیں قائد ملت سلفیہ سینیٹر پروفیسر ساجد میر کی امارت اور سینیٹر ڈاکٹر حافظ عبدالکریم کی نظامت میں نفاذ اسلام کے لئے کوشاں ہیں۔ ملکی دفاع اور سلامتی کے لئے ہم اپنا تن من دھن سب کچھ قربان کرنے کو تیار ہیں۔ ڈویژنل اجلاس سے چوہدری محمد یٰسین ظفر پرنسپل جامعہ سلفیہ، ڈاکٹر طارق عباس، حافظ عبدالرحمان آزاد، حافظ محمد اکبر جاوید، علامہ عبدالصمد معاذ، خالد محمود اعظم آبادی، چوہدری حبیب اللہ عطار، حکیم عرفان اللہ طاہر، قاری محمد حنیف بھٹی ‘سعید احمد انصاری‘ مولانا محمد عالم گیر‘ حافظ ابو بکر پٹوی‘ قاری بشیر احمد عزیزی و دیگر نے بھی اپنے خیالات کا اظہار کیا۔ تمام ذمہ داران کی کارکردگی رپورٹ کو سینیٹر پروفیسر ساجد میر حفظہ اللہ نے سراہتے ہوئے کہا کہ یہ ملک ہماراہے‘ ہمارے اسلاف نے لاکھوں قربانیاں دیکر اس کو حاصل کیا تھا‘ اس کا دفاع ہماری ذمہ داری ہے‘ بھارت ہوش کے ناخن لے‘ اگر اس نے اپنی حرکتیں بند نہ کیں تو پھر اس کی بقاء خطرے میں پڑ سکتی ہے۔پوری دنیا کا امن تباہ و برباد ہو جائے گا۔ عالمی طاقتیں دراصل اسلام و پاکستان کی دشمن ہیں‘ انڈیا ان کی شہ پر ہی یہ سب کچھ کر رہا ہے۔
اسلام کے نظام عفت وعصمت میں عورت سب سے زیادہ محفوظ ہے۔ پروفیسر ساجد میر
لاہور(       ) مرکزی جمعیت اہل حدیث پاکستان کے سربراہ سینیٹر پروفیسر ساجد میر﷾ نے کہا ہے کہ مغربی خواتین میں اسلام قبول کرنے کا رجحان قابل تحسین ہے ۔یہ اسلام کی صداقت کی دلیل ہے ۔مسلمان معاشروں میں عورتوں کے ساتھ بعض ناانصافیاں اسلامی تعلیمات پر عمل کا نہیں بلکہ ان سے انحراف اور مختلف ملکوں کے مقامی کلچر کو اپنا لینے کا نتیجہ ہیں۔ جامعہ ابراہیمیہ میں جمعہ کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے پروفیسر ساجد میر نے کہا کہ مسلمان عورتوں کے لیے سیدہ عائشہ اور سیدہ فاطمہ رول ماڈل ہیں۔عورت کو اشتہارات کی زینت بنانے والے مسلم تہذیب اور اقدار کے قاتل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مغرب میں خواتین  مسلمانوں کے عمل و کردار کی کوتاہیوں کو نظر انداز کرتے ہوئے قرآن و سنت میں پائے جانے والے اصل اسلام کو جاننے اور سمجھنے کے بعد اسلام قبول کررہی ہیں۔ پروفیسر ساجد میرنے کا کہنا تھا کہ اسلام کی مقرر کردہ حدود کی پابندی کا اہتمام نہ ہونے کی وجہ سے مسلمان معاشروں میں بھی خاندانی سطح پر وہ خرابیاں تیزی سے بڑھ رہی ہیں جنہوں نے مغرب میں خاندان کے ادارے کی تباہی میں بنیادی کردار ادا کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ تعلیمی اداروں اور پھر دفاتر اور کار گاہوں میں آزادانہ اختلاط مرد و زن، ذرائع ابلاغ کی حیا سوز پالیسیوں، سوشل میڈیا کی صورت میں موبائل فون اور انٹرنیٹ کے ذریعے چوبیس گھنٹے باہمی رابطوں کے کھلے مواقع، اس کے ساتھ ساتھ مسلم معاشروں میں مقامی ثقافتوں کے زیر اثر رائج غیر منصفانہ اور ظالمانہ رسوم و رواج اور ان کے سبب جنم لینے والی بے اطمینانی، یہ سب عوامل خاندان کے ادارے کو کمزور کرنے کا سبب بن رہے ہیں۔
مرکزی جمعیت اہل حدیث برطانیہ کی مجلس عاملہ کا اجلاس
بریڈفورڈ(پ۔ر) برطانیہ میں مستقبل میں پیدا  کیے جانے والے بعض مسائل مسلمانوں کیلئے خاص طور پر تشویشناک ہیں ۔جن میں سر فہرست مسلمان بچوں کی تعلیم میں جنسی بے راہروی کو قانونی آزادی دیناہے لہذا تمام مسلمانوں کو فرقہ واریت اور دیگر تعصبات سے بالاتر ہوکر کام کرنا ہوگا۔ ان خیالات کا اظہار قائدین مرکزی جمعیت اہل حدیث برطانیہ نے ورکنگ کمیٹی کے اجلاس منعقدہ اولڈھم میں کیا۔ اجلاس کا آغازگزشتہ اتوارکوقاری عطاء الرحمن کی تلاوت کلام مجید سے کیا گیا۔ صدر اجلاس مولانامحمد ابراہیم میرپوری نے رفقاء کو خوش آمدید کہتے ہوئے اسے زیادہ سے زیادہ بامقصد بنانے کی ہدایات دیں۔ ناظم اعلیٰ مولاناحبیب الرحمن نے اجلاس کا ایجنڈہ پر گفتگوکرتے ہوئے بتایا کہ قائدین جمعیت نے پچھلے انتخابات کے بعد سے اب تک تمام برانچوں کا دورہ مکمل کرلیاہے۔ امیر وناظم اعلیٰ کے علاوہ ناظم تبلیغ مولانا شریف اللہ ،ناظم نشرواشاعت مولاناعبدالاعلیٰ درانی ، مولانا عبدالستار عاصم وغیرہ نے بریڈفورڈ، سکپٹن، نیلسن ، پریسٹن ، میڈن ہیڈ ، ریڈنگ ، لندن، ڈڈلی ، برمنگھم ، اولڈھم، مانچسٹر، ہڈرسفیلڈ، گلاسگو، برٹن آن ٹرنٹ سمیت  سب برانچوں کے احباب سے ملاقاتیں کیں‘ ان کے مسائل اور آراء سنیں مشوروں سے آگاہی حاصل کی۔ ناظم تعلیمات مولانا حافظ عبدالباسط عمری ، مولاناکنور شکیل لندن اوردیگر ناظمین نے اپنے اپنے حلقات میں جمعیت کا پیغام پہنچایا‘ جمعیت کی تشکیل وتجدیدنئے دستوری معاملات اور تنظیم نو ، مردم شماری ممبران کی رائے شماری جیسے امورپراظہار خیال ہوا اور اراکین عاملہ نے کئی معاملات کاقائدین کواختیار دیا۔ مولانا منیرقاسم نے دورہ سعودی عرب کی تفصیلات سے آگاہ کیا،متفرقات میں مولانا محمد ابراہیم میرپوری امیر جمعیت نے کہا کہ جنسی تعلیم میں آزادی کیلئے جو منصوبہ بندی کی گئی ہے اور اب وہ ہاؤس آف لارڈ سے منظور بھی ہوچکی ہے جسے قابل بحث بنانے کیلئے بھی ایک لاکھ لوگوں کا متفق ہونا ضروری ہے اگرہم اس مہم میں ناکام ہوجاتے ہیں توہمارا مستقبل سخت مخدوش ہوجائے گا۔ ناظم اعلی مولانا حافظ حبیب الرحمن نے کہا اسی طرح شناخت میں مرد اگر اپنے آپ کو عورت رجسٹر کروانا چاہے توقانونی طور پرآزادی دی  جارہی ہے‘ یہ قانونی دفعہ نہایت ہی مضر ہے‘ کل کو مساجد کمیٹیوں میں اس قسم کے مخلوط جنس والوں کا سد باب نہیں ہوسکے گا۔ ناظم نشر واشاعت مولانا عبدالاعلیٰ درانی نے کہا کہ پاکستانی کمیونٹی سارازور چارہزار میل دورپیدا ہونے والے مسائل میں زیادہ دلچسپی لیتے ہیں حالانکہ برطانیہ اور یورپ میں مقیم پاکستانیوں کازیادہ لحاظ مقامی مسائل سے آگاہ رہنے میں ہونا چاہیے کیونکہ یہ ہماری نسلوں کا ملک ہے اچھی یابری قانونی کارروائیوں کازیادہ اثر ان پر پڑتا ہے اس لیے ہمیں یہاں کے مسائل سے چشم پوشی کی روش کو چھوڑنا ہوگا۔ مولانا عبدالکریم ثاقب نے کہا کہ ہمیں کسی علاقائی یا فرقہ وارانہ نگاہ سے نہیں مسلمان کی حیثیت سے سوچنا ہوگا اور اس قسم کے مسائل پر یکجان ہوکرکام کرنا ہوگا، مولاناحمود الرحمن نے کہا مانچسٹر میں مسلم کمیونٹی متحد ہوکر سیمنار منعقد کرا رہی ہے، جس میں تمام مکاتب فکر کے حضرات مل بیٹھیں گے اور درپیش مسائل پر سوچ و بچار کریں گے، جو بہت خوش آئند بات ہے دوسرے شہروں میں بھی مسلمانوں کوایسے اتحاد کو فروغ دینا ہوگا۔ مولاناشعیب میرپوری نے کہا کہ ہمارے لارڈحضرات جومسلمانوں کے مستقبل بارے میں کافی تحفظات رکھنے کے باوجود ناکام رہ جاتے ہیں کیونکہ ان کی کمیونٹی پشت پناہی کرنے میں دلچسپی نہیں رکھتی جیسے ’’گے‘‘ کاشرمناک قانون یہاں پاس ہوکر لاگو کیا جاچکا ہے اور بدقسمتی سے بالائی سطح پر موجود لوگ قانون منطور ہوتے وقت خاموش ہوجاتے ہیں ضروری ہے کہ انہیں امت مسلمہ کے مجموعی مفادات کالحاظ و پاس ہونا چاہیئے ، اجلاس میں مرحومین جن میں مولانانذیراحمد سبحانی ،مولانا عبدالعزیزراشد، چوہدری محمد اشرف مانچسٹرکی ہمشیرہ  مولانا عبدالرحمن سموں ودیگر فوت ہوجانے والے تمام حضرات کے لیے دعائے مغفرت کی ۔مجلس عاملہ کے اجلاس کے بعد ماہنامہ صراط مستقیم برمنگھم کی مجلس ادارت کا اجلاس ہوا جس میں مولاناعبدالکریم ثاقب، مولاناحفیظ اللہ خان ،  مولانا عبدالاعلی درانی،ڈاکٹر عبدالرب ثاقب، مولانا شفیق الرحمن شاہین ، مولانا شعیب میرپوری نے اظہار خیال کیا۔ مولاناڈاکٹر صہیب حسن نے  مجلہ صراط مستقیم کی افادیت  پر گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ یورپ بھرمیں اس کاایسا معیار ہے جو کسی دوسرے جریدے کا نہیں اگرچہ اردودان کاحلقہ محدود ہورہاہے پھربھی اس مجلے سے استفادہ کرنے والوں کی تعداد دنیا کے تمام ممالک میں زیادہ ہے ،جوآئے دن بڑھ رہی ہے ،  اور ہم اپنے محدود وسائل کی وجہ سے ان کی طلب پوری نہیں کرسکتے ، صراط مستقیم کے انگریزی ایڈیشن کو انٹرنیٹ پر باقاعدگی سے شائع کیا جائے گا۔ اراکین مجلس ادارت نے مختلف آراء پیش کیں جنہیں مجلس عاملہ کے اگلے اجلاس میں منظوری کیلئے پیش کیا جائے گا،اختتام پر اولڈھم جماعت کے تمام ذمہ داران اورخطیب مولانا شفیق الرحمن شاہین کی خدمات کا شکریہ ادا کیا گیا۔
قصور شہر میں ناظم اعلیٰ پنجاب مولانا عبدالرشید حجازی کی تشریف آوری
جامع مسجد حسین بن علی بستی لال شاہ قصور شہر میں عرصہ 6 سال سے دروس قرآن کا سلسلہ جاری ہے۔ یہ پروگرام بعد نماز فجر ہوتے ہیں جس میں الحمد للہ نامور سکالرز‘ پروفیسرز‘ شیوخ الحدیث اور ممتاز علماء کرام تشرثیف لاتے ہیں۔یہ پروگرام فرقہ واریت سے بالا تر‘ بین المسالک ہم آہنگی اور جذبہ حب الوطنی کے فروغ کے تحت منعقد کیے جاتے ہیں۔ اللہ تعالیٰ کی توفیق سے پروگراموں کے مثالی انتظامات کیے جاتے ہیں جو سوشل میڈیا پر بھی نشر ہوتے ہیں۔ الحمد للہ 24 فروری 2019ء بروز اتوار بعد نماز فجر مجاہد اسلام مولانا عبدالرشید حجازی ناظم اعلیٰ پنجاب نے درس قرآن ارشاد فرمایا۔ جس میں علاقہ بھر کے تقریبا 65 علماء نے شرکت کی۔ درس قرآن کے بعد علماء کرام سے ایک میٹنگ (تربیتی ورکشاپ) بھی ہوئی جس میں مہمان خصوصی مولانا میاں داؤد ارشد امیر ضلع قصور اور مولانا قاری محمد صدیق شاکر ناظم ضلع قصور‘ حافظ عبدالسلام ناظم مساجد ضلع قصور‘ ملک اعجاز احمد جوئیہ صدر AYF ضلع قصور‘ قاری سلیم عثمانی جنرل سیکرٹری AYF ضلع قصور‘ پروفیسر زاہد احمد شیخ وائس پرنسپل گورنمنٹ اسلامیہ کالج قصور الحاج محمد عباس سیاسی وسماجی شخصیت قصور حافظ محمد الیاس صدر AYF قصور شہر‘ مولانا قاری محمد عبداللہ ساجد امیر مصطفی آباد‘ حاجی محمد احمد نائب امیر مصطفی آباد‘ جناب محمد عمران سلفی صدر پریس کلب مصطفی آباد‘ قاری محمد اکرم سالک‘ محمد یوسف عابد‘ قاری محمد اسماعیل ساجد نے شرکت کی۔ یہ ورکشاپ زیر صدارت قاری عبدالشکور برق مدیر مرکز دعوت واصلاح ہوئی۔ اس کے بعد قاری عبدالشکور برق نے توجہ دلائی کہ قصور شہر کے امیر قاری بلال احمد بیمار ہیں ان کی تیمار داری کر لی جائے تو ان کی عیادت کے لیے ناظم اعلیٰ پنجاب جناب مولانا عبدالرشید حجازی‘ میاں داؤد ارشد امیر ضلع قصور‘ مولانا صدیق شاکر ناظم ضلع قصور‘ حافظ عبدالسلام ناظم مساجد ضلع قصور‘ قاری عبدالشکور برق‘ قاری محمد عبداللہ ساجد اور قاری محمد سلیم عثمانی کے علاوہ ناظم اعلیٰ محترم سینیٹر جناب ڈاکٹر حافظ عبدالکریم حفظہ اللہ نے بھی شرکت فرمائی۔ استقبالیہ! محترم قاری ابوبکر عثمانی‘ حافظ معاذ عبدالشکور‘ مہر عبدالرشید‘ محمد عمیر برق‘ حافظ محمد الیاس۔
مرکزی جمعیت اہل حدیث عزیز بھٹی ٹاؤن لاہور کی شوریٰ کا اجلاس ونامزدگی
مرکزی جمعیت اہل حدیث عزیز بھٹی ٹاؤن لاہور کی شوریٰ کا اجلاس مورخہ یکم مارچ 2019ء بروز جمعۃ المبارک بمقام جامعۃ الدراسات الاسلامیہ (مرکز ام الہدیٰ) ہربنس پورہ لاہور زیر سرپرستی شیخ الحدیث مولانا عبدالرشید مجاہد آبادی (رئیس الجامعہ) زیر نگرانی صاحبزادہ حافظ عبدالرؤف ناظم الجامعہ‘ زیر صدارت محترم جناب حکیم عبدالرحمن زاہد امیر عزیز بھٹی ٹاؤن منعقد ہوا۔
مرکزی جمعیت اہل حدیث واہگہ ٹاؤن لاہور کی شوریٰ کا اجلاس مورخہ 8 مارچ 2019ء بمقام جامع مسجد مبارک اہل حدیث نصیر آباد داروغہ والا لاہور زیر صدارت محترم جناب قاری مشتاق احمد فاروقی منعقد ہوا۔ دونوں اجلاسوں میں بطور مہمان خصوصی محترم جناب پروفیسر ڈاکٹر شہباز حسن‘ محترم جناب پروفیسر ڈاکٹر مطیع اللہ باجوہ‘ محترم جناب حافظ عبدالوحید (رئیس دار الفلاح) جناب حافظ ریان اللہ مدنی (فاضل مدینہ یونیورسٹی) جناب پروفیسر ڈاکٹر محمد ابراہیم سلفی ناظم ضلع لاہور جناب محمد اسلم ظہیر‘ جناب حافظ محمد اشرف قمر‘ حافظ محمد مصطفی تشریف لائے۔ اراکین شوریٰ‘ علماء وخطباء کی بڑی تعداد نے شرکت کی اور مندرجہ ذیل فیصلہ جات ہوئے:
1          مرکزی جمعیت اہل حدیث عزیز بھٹی ٹاؤن کے لیے محترم جناب مولانا عبدالرحمن زاہد امیر ٹاؤن کے ساتھ جناب مولانا قاری مبشر رشید کو ناظم اور جناب حافظ حبیب الرحمن مجاہد آبادی کو ناظم مالیات نامزد کیا گیا۔
2          مرکزی جمعیت اہل حدیث واہگہ ٹاؤن لاہور کے لیے قاری محمد دین سلفی کو امیر اور مولانا حبیب الرحمن بھٹوی کو ناظم اور مولانا ابوسفیان میر محمدی کو ناظم تبلیغ نامزد کیا گیا۔
3          زیادہ سے زیادہ اہل حدیث افراد کوتنظیمی وجماعتی دھارے میں لانے کے لیے کوششیں تیز کی جائیں۔
4          ضلع بھر میں فی الفور تبلیغی ورفاہی کام تیز کیا جائے۔
5          مرکز گریز سرگرمیوں میں ملوث افراد کی طرف سے مرکزی قیادت پر اٹھائے جانے والے بھونڈے اور جھوٹے الزامات واعتراضات کا مثبت رویہ میں مؤثر جواب دیا جائے۔
بعد ازاں مورخہ 11 مارچ بروز سوموار جامع مسجد نجم اہل حدیث احاطہ تھانیدار لاہور میں محترم الشیخ ابوبکر صدیق کی سرپرستی میں مرکزی جمعیت اہل حدیث ضلع لاہور کے وفد نے جناب رائے محمد ابراہیم امیر شالا مار ٹاؤن لاہور سے ملاقات کی۔ انہوں نے خوب فراخدلی کا مظاہرہ کرتے ہوئے فرمایا کہ میرے سمیت شالا مار ٹاؤن لاہور کے اکثر احباب کابینہ وشویٰ نے فیصلہ کیا کہ وہ ہمیشہ کی طرح اب بھی بدستور مرکزی جمعیت اہل حدیث کے ساتھ رہیں گے۔ انہوں نے اپنے تمام ساتھیوں کی طرف سے نمائندگی کرتے ہوئے حضرت الامیر جناب پروفیسر ساجد میر کے احکامات کی بجا آوری کا اظہار فرمایا اور مرکزی قیادت پر اور لاہور جماعت پر مکمل اعتماد کرنے کا اعلان کیا۔ وفد میں جناب پروفیسر عبدالرحمن لدھیانوی‘ جناب حافظ محمد اشرف قمر‘ مولانا مشتاق احمد فاروقی امیر لاہور‘ پروفیسر ڈاکٹر محمد ابراہیم سلفی ناظم لاہور‘ قاری محمد دین سلفی امیر واہگہ ٹاؤن لاہور شامل تھے۔ اس کے بعد وفد جامع مسجد چغتائی باغبانپورہ پہنچا اور جناب حافظ محمد حنیف مدنی سے ملاقات کی جنہوں نے رائے محمد ابراہیم سے فیصلہ کی توثیق فرمائی۔
جمعیۃ اساتذہ فیصل آباد ڈویژن کا کنونشن
جمعیۃ اساتذہ فیصل آباد ڈویژن کے زیر اہتمام تعلیمی وتربیتی دوسرا سالانہ کنونشن بتاریخ 13 جنوری بروز اتوار فیصل آڈیٹوریم ہال‘ جامعہ سلفیہ فیصل آباد میں منعقد ہوا‘ زیر صدارت محترم حاجی بشیر احمد صدر جامعہ سلفیہ‘ زیر نگرانی محترم چوہدری پروفیسر محمد یٰسین ظفر پرنسپل جامعہ سلفیہ۔ اس موقع پر ڈویژن بھر سے اساتذہ نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ کنونشن کی دو نشستیں ہوئیں‘ پہلی نشست صبح 9 بجے تا 12:30 تھی‘ پہلی نشست کا آغاز ڈاکٹر پروفیسر حافظ ہدایت اللہ زاہد سینئر نائب صدر جمعیۃ اساتذہ فیصل آباد کی تلاوت سے ہوا۔ حافظ محمد زکریا قصوری صدر جمعیۃ اساتذہ ضلع فیصل آباد نے ابتدائی کلمات میں انتظامیہ کا انتظامات اور پر تکلف ضیافت پر تہہ دل سے شکریہ ادا کیا۔ بعد ازاں خطبہ استقبالیہ کے لیے پروفیسر ڈاکٹر محمد عباس طور صدر جمعیۃ اساتذہ ڈویژن فیصل آباد کو دعوت سخن دی گئی۔ آپ نے ڈویژن بھر سے آئے ہوئے اساتذہ اور دیگر تنظیموں کے قائدین کا خیر مقدم کیا۔ اس کے بعد پروفیسر ڈاکٹر محمد سعید احمد چنیوٹی نے تزکیہ نفس کے عنوان پر پر مغز اور جامع خطاب کیا۔ علامہ عبدالصمد معاذ نے طلبہ کی کردار سازی میں اساتذہ کا کردار پیش کیا۔ ڈاکٹر پروفیسر عتیق امجد نے معاشرہ کی تشکیل اور سلفی اساتذہ کی خدمات کو سراہا۔ پروفیسر محمد ندیم گجر صدر جمعیۃ اساتذہ ضلع ٹوبہ نے اپنی قرار داد میں عربی ہشتم کے امتحان لیے جانے پر زور دیا اور اساتذہ سے تائید لی۔ پروفیسر نجیب اللہ طارق نے طلبہ کی عملی زندگی پر اساتذہ کے اثرات کے عنوان پر جامع خطاب کیا۔ ناظم پنجاب مولانا عبدالرشید حجازی نے نظم جمعیۃ کی اہمیت ومقصدیت پر تفصیل سے روشنی ڈالی۔ جمعیۃ اساتذہ صوبہ پنجاب کے صدر پروفیسر حافظ عثمان ظہیر نے اپنے خطاب میں اساتذہ کے کردار کی اہمیت پر زور دیا اور کہا کہ معاشرے کی اصلاح کے لیے استاد کو اپنا کردار ادا کرنا چاہیے۔پروفیسر ڈاکٹر مسعود قاسم نے اساتذہ کے تعلیمی مسائل اور ان کا حل بتایا۔ پروفیسر عبدالرزاق ساجد نے عصری اداروں میں منہجی کام کا طریقہ کار اساتذہ کے سامنے رکھا۔ شیخ الحدیث مولانا محمد یونس بٹ نے اعتدال‘ مفہوم اور اہمیت کو اجاگر کیا۔
دوسری نشست کا آغاز تلاوت سے ہوا۔ قاری بشیر احمد عزیزی امیر تحصیل تاندلیانوالہ نے ’’بنام اساتذہ‘‘ ایک شاندار نظم پڑھی‘ پروفیسر ڈاکٹر محمد امان اللہ بھٹی نے اساتذہ کو تعلیمی اداروں میں بروقت پہنچنے اور بلاوجہ چھٹی نہ کرنے کی افادیت سے آگاہ کیا اور سربراہ ادارہ سے تعاون اور دل جیتنے کے راز بتلائے۔ پروفیسر عطاء الرحمن ظہیر نے تعلیمی مسائل اور ان کا حل بتلایا۔ نیز حکومت کی غلط پالیسیوں کا سد باب کرنے میں جمعیت کی خدمات کا ذکر کیا اور نصاب تعلیم کی بہتری میں مفید آراء وتجاویز دیں۔
آخر میں پروفیسر حافظ عتیق اللہ عمر (صدر جمعیۃ اساتذہ) نے اپنے خطاب میں دو سالہ کارکردگی کے حوالہ سے بتایا کہ الحمد للہ! ہم نے دو سال کے قلیل عرصے میں پاکستان کے تین صوبوں پنجاب KPK اور بلوچستان کے علاوہ آزاد کشمیر اور گلگت بلتستان میں نظم قائم کر دیا ہے۔ ملک کے 50 اضلاع کی 125 تحصیلوں میں دورے کیے اور نو ہزار اساتذہ کو تنظیم سے منسلک کیا ہے۔ ایک سو کے قریب اہل حدیث پی ایچ ڈی اساتذہ کا ڈیٹا جمع کیا ہے۔
محترم محمد شریف گجر سیکرٹری جنرل جمعیۃ اساتذہ ڈویژن فیصل آباد‘ محترم محمد شعیب حامد سیکرٹری جنرل جمعیۃ اساتذہ ضلع فیصل آباد اور محترم ابوبکر جمیل سیکرٹری جنرل جمعیۃ اساتذہ سٹی فیصل آباد نے کنونشن کو بارونق بنانے میں نمایاں کردار ادا کیا۔
نقابت کے فرائض پروفیسر ڈاکٹر حافظ عبدالرزاق ظہیر صدر جمعیۃ اساتذہ سٹی فیصل آباد نے انجام دیئے۔ اس شاندار سیمینار میں خصوصی طور پر مولانا عبدالرحمن آزاد امیر فیصل آباد‘ مولانا حافظ محمد اکبر جاوید ناظم فیصل آباد‘ ابوبکر پٹوی جنرل سیکرٹری AYF ضلع فیصل آباد‘ مجاہد علوی صدر ASF ضلع فیصل آباد‘ عطاء الرحمن عامر‘ عبدالمنان سعید‘ محمد اکرم طوفانی‘ مولانا محمد اسلم طور‘ چوہدری حنظلہ‘ افتخار احمد‘ سید عبیداللہ شاہ‘ محمد منشاء ضیاء نے شرکت کی۔ جمعیۃ اساتذہ پنجاب کے سیکرٹری جنرل پروفیسر حافظ عبدالباسط ظہیر اپنی ذاتی مجبوری کی وجہ سے شرکت نہ کر سکے۔
ضلع خوشاب کی تبلیغی سرگرمیاں
میاں بلال طارق سرپرست مرکزی جمعیت وAYF ضلع خوشاب اور مولانا دلدار عاجز امیر ضلع کی قیادت میں ضلع خوشاب کے معزز علماء کرام وذمہ داران نے جنوری 2016ء میں درج ذیل تبلیغی پروگرام کیے:
11 جنوری بعد نماز مغرب جامع مسجد اہل حدیث ہجرا کالونی جوہر آباد میں قاری عبدالوہاب ربانی ناظم تحصیل خوشاب۔
12 جنوری بروز ہفتہ بعد نماز مغرب جامع مسجد ریاض الجنۃ اہل حدیث جوہر آباد میں مولانا عیسیٰ فاروقی جنرل سیکرٹری AYF ضلع خوشاب اور جامع مسجد ابوہریرہ اہل حدیث جوہر آباد میں مولانا عبدالحفیظ اکرم اور بعد نماز عشاء جامع مسجد اہل حدیث رمضان کالونی جوہر آباد میں مولانا عیسی فاروقی۔ 14 جنوری بروز سوموار بعد نماز مغرب جامع مسجد الرحمن اہل حدیث محلہ صابر آباد خوشاب میں مولانا شکیل اصغر ڈار صدر AYF ضلع خوشاب جامع مسجد ریاض الجنۃ اہل حدیث خوشاب میں۔ مولانانصر اللہ فاروقی سیکرٹری اطلاعات AYF ضلع خوشاب جامع مسجد حفظانی اہل حدیث خوشاب میں بعد نماز عشاء مولانا شکیل اصغر ڈار‘ جامع مسجد محمدی اہل حدیث بلاک 14 جوہر آباد میں بعد نماز عشاء پروفیسر احسان اللہ فاروقی ناظم ضلع خوشاب اور جامع مسجد محمد اہل حدیث محلہ اسلام پورہ خوشاب میں بعد نماز عشاء مولانا نصر اللہ فاروقی نے درس قرآن وحدیث دیا۔
17 نوری بروز جمعرات بعد نماز مغرب جامع مسجد معہد الشرعی جوہر آباد مولانا مقصود عالم۔ 19 جنوری بروز ہفتہ بعد نماز عصر جامع مسجد اقصیٰ اہل حدیث خوشاب‘ مولانا عبدالحفیظ اکرم صدر AYF تحصیل خوشاب‘ جامع مسجد محمدی اہل حدیث گنجیال بعد نماز مغرب مولانا عیسیٰ فاروقی نے خطابات کیے۔
جمعیۃ اساتذہ کے مرکزی صدر کا دورۂ شمالی پنجاب
جمعیۃ اساتذہ پاکستان شمالی پنجاب کے تحرک وجائزہ کے لیے مرکزی اور صوبائی ذمہ داران کا دورہ۔ شرکائے وفد: پروفیسر حافظ عتیق اللہ عمر (مرکزی صدر)‘ پروفیسر حافظ محمد عثمان ظہیر (صدر صوبہ پنجاب) اور پروفیسر حافظ سیف الرحمن بٹ (سیکرٹری جنرل شمالی پنجاب) 23 فروری مغرب کے وقت جامعہ علوم اثریہ جہلم پہنچے۔ اساتذہ کے ساتھ میٹنگ ہوئی۔ شیخ حافظ سعد مدنی فاضل مدینہ یونیورسٹی‘ حافظ عبدالغفور‘ حافظ عمر اور الشیخ حافظ عبدالحمید عامر حفظہ اللہ‘ نوید احمد بشار وجملہ احباب نے شفقت بھری میزبانی اور حوصلہ افزائی فرمائی۔ جزاہم اللہ خیرا۔ رات وہیں قیام کیا۔ علی الصبح احباب گرامی نے پر تکلف ناشتے کے بعد دعاؤں کے ساتھ الوداع کیا۔ نماز ظہر سے قبل فضیلۃ الشیخ ڈاکٹر طالب الرحمن شاہ حفظہ اللہ کے مرکز راولپنڈی پہنچے۔ اساتذہ سے میٹنگ ہوئی۔ بعد نماز ظہر ڈاکٹر طالب الرحمن شاہ سے ملاقات ہوئی۔ آپ نے بہت شفقت فرمائی۔ نماز مغرب واہ کینٹ الشیخ مولانا سید عتیق الرحمن شاہ محمدی امیر امیر ضلع راولپنڈی کے مرکز پہنچے۔ وہاں اساتذہ سے تفصیلا ملااقت ہوئی ۔ بعد نماز مغرب مرکز میں خطابات عام ہوئے۔ الشیخ محمدی صاحب کے در دولت پہ پُر تکلف عشائیہ دیا گیا۔ احباب گرامی اور جماعتی احباب نے دعاؤں سے الوداع کیا اور واپسی ہوئی۔ اللہ تعالیٰ اس دورہ کو جماعتی ترقی وعروج کا ذینہ بنائے اور اپنی رضا کے لیے قبول فرمائے۔


No comments:

Post a Comment