ذرا نم ہو تو یہ مٹی ... 12-2019 - ھفت روزہ اھل حدیث

تازہ ترین

Sunday, July 14, 2019

ذرا نم ہو تو یہ مٹی ... 12-2019


ذرا نم ہو تو یہ مٹی ....؟!

تحریر: جناب پروفیسر عتیق اللہ عمر
مرکزی جمعیت اہل حدیث پاکستان کا ’’اساتذہ ونگ‘‘ جمعیۃ اساتذہ پاکستان نئے نظم اور عزم کے ساتھ گذشتہ دو سالوں سے مصروف عمل ہے۔ اولاً جماعتی اکابرین کے تعاون اور مشورے سے ابتدائی نظم تشکیل دیے گئے جو مسلسل اور بھر پور دورہ جات اور میٹنگز میں اس کی اہمیت وافادیت سے آگاہ کیا گیا۔ جلدہی الحمد للہ! بہت اچھا رد عمل سامنے آیا تو کنونشنز کا سلسلہ اور تربیتی نشستوں کا اہتمام کر دیا گیا۔
۳ ماہ قبل جمعیۃ نے ڈویژنل تربیتی کنونشنز کا اعلان کیا۔ اللہ تعالیٰ کے فضل وکرم سے صوبہ پنجاب کی ۹ میں سے ۷ ڈویژنوں میں یہ سلسلہ نومبر ۲۰۱۸ء سے جنوری ۲۰۱۹ء تک مکمل کر لیا گیا۔
ان تمام پروگراموں میں مرکز کی طرف سے ڈاکٹر عبدالغفور راشد صاحب کی ہمہ تن سرپرستی اور حوصلہ افزائی شامل حال رہی جن پر جمعیۃ اساتذہ ان کی شکر گذار ہے۔
علاوہ ازیں مرکزی جمعیۃ اہل حدیث کے مقامی اکابرین‘ اہل حدیث یوتھ فورس پاکستان کے نوجوانان‘ اہل حدیث سٹوڈنٹس فیڈریشن کی قیادت اور سٹوڈنٹس‘ جمعیۃ طلبہ اہل حدیث پاکستان کی قیادت اور طلبہ کا بھر پور تعاون ممد ومعاون ثابت ہوا۔
جمعیۃ اساتذہ پاکستان کے مرکزی وفد میں راقم الحروف کے علاوہ پروفیسر عطاء الرحمن ظہیر‘ پروفیسر حافظ عثمان ظہیر‘ پروفیسر عبدالباسط ظہیر‘ ڈاکٹر امان اللہ بھٹی‘ ڈاکٹر عبدالرحیم اشرف‘ خلیل الرحمن ثاقب اور پروفیسر عبدالرزاق ظہیر شامل رہے۔
ڈویژن لاہور کے لیے خلیل الرحمن ثاقب‘ ثناء الرحمن بھٹہ‘ فیض اللہ خاں غوری‘ سیف اللہ ظہیر‘ عزیز الرحمن کلیم‘ مولانا فاروق محمدی‘ حافظ عثمان خالد۔ … ڈویژن گوجرانوالہ میں مولانا نور اللہ واثق‘ ڈاکٹر انور جاوید گھمن‘ اسماعیل سجاد‘ رانا عبدالعلیم قاسم‘ قاری عتیق الرحمن‘ ضیاء اللہ گورایہ‘ اکرام اللہ ساجد … ڈیرہ غازیخاں ڈویژن کی طرف سے ڈاکٹر عبدالرزاق شاد‘ پروفیسر عقیل احمد خاں‘ مولانا محمد ابراہیم سلفی۔ … ملتان ڈویژن میں سید عبدالغفار شاہ‘ مفتی عبدالغفار فردوسی‘ صاحبزادہ رضوان فردوسی۔ … ساہیوال ڈویژن کے لیے قاری محمد یعقوب طاہر‘ عبدالقیوم صابر‘ محمد زمان خان‘ قاری بشیر احمد انجم‘ حافظ عبدالجبار زاہد‘ محترم محمد زاہد۔ … سرگودہا ڈویژن کی طرف سے حامد اللہ کمیر پوری‘ حافظ گلزار احمد۔ … اور فیصل آباد ڈویژن میں محمد زکریا قصوری‘ ڈاکٹر عبدالرزاق ظہیر‘ صاحبزادہ ابوبکر جمیل‘ ڈاکٹر محمد عباس طور۔
بھر پور محنت‘ کوشش‘ تعاون اور رابطے سے ان تعلیمی وتربیتی نشستوں کو کامیاب بنایا۔ اللہ تعالیٰ ان تمام احباب گرامی کو جزائے خیر عطا فرمائے۔ مرکز ان کے لیے بھر پور دعا گو‘ خراج تحسین اور شکریے کا نذرانہ پیش کرتا ہے۔ یہ سب اس لیے بھی ضروری ہے کہ من لم یشکر الناس لم یشکر اللہ اور ویسے بھی جماعتی زندگی میں کارکنان کی حوصلہ افزائی ایندھن اور ریچارج کا کام کرتی ہے۔
میں نے اس پوری مشق میں جو حوصلہ افزا چیزیں دیکھیں وہ درج ذیل ہیں:
1          ہر جگہ الحمد للہ! بھر پور تشہیر کا بندوبست کیا گیا اور حاضری کے لحاظ سے تمام پروگرامز بھر پور ہوئے۔
2          بٹھانے کا انتظام اکثر مقامات پر اعلیٰ اور چند ایک پر بہت ہی اعلیٰ تھا۔
3          ہر جگہ الحمد للہ پروگرام کا شیڈول جاری کیا گیا اور تقریبا اس کا احترام بھی کیا گیا۔
4          تمام پروگرامز میں مدعوین مہمانان گرامی بروقت تشریف لاتے رہے۔
5          مقررین نے اپنے موضوعات کے ساتھ مکمل انصاف کرنے کی بھر پور کوشش کی۔
6          ہر جگہ تمام مہمانوں کے لیے کھانے کے اعلیٰ انتظامات کیے گئے۔ کسی ایک جگہ بھی کوتاہی یا بدنظمی نظر نہیں آئی۔
7          جماعت کے تمام ونگز کی نمائندگی کے ساتھ ساتھ دیگر اساتذہ تنظیموں کی نمائندگی کو بھی مدعو کیا گیا۔
8          میڈیا پر کوریج کی بھی ابتدائی کوشش کی گئی اور سوشل میڈیا پر بھر پور کوریج کا اہتمام کیا گیا جو وقت کی ضرورت اور تقاضا بھی ہے۔
9          مرکزی وفد ایک دو کے علاوہ ہر جگہ بر وقت اور کہیں کہیں وقت سے بھی پہلے پہنچا۔
0          تمام پروگرامز کی رپورٹ مرکزی آرگن ’’ہفت روزہ اہل حدیث‘‘ میں مسلسل شائع ہوتی رہی جس پر ہم ناظم دفتر مولانا طارق جاوید کو خراج تحسین اور ہفت روزہ کی انتظامیہ کے بھر پور شکر گذار ہیں۔ بارک اللہ فیکم!
نظم میں نکھار اور مزید بہتری کے لیے چند ایک گذارشات بھی پیش خدمت ہیں۔
1          حاضرین میں ہر کسی کو بروقت تشریف لانے کی کوشش کرنا چاہیے تا کہ پروگرامز بروقت شروع اور ختم کیے جا سکیں۔
2          مقررین کو اپنے دیئے گئے موضوع اور وقت کا مزید احترام کرنا چاہیے۔
3          مقامی مقررین کو مہمانوں کو بھر پور وقت دینے کی گنجائش رکھنا چاہیے۔
4          اساتذہ کرام پروگرام کے دوران تربیتی نوٹس لازمی لیا کریں اور واپس جا کر ان پروگرامز کی تائید اور افادیت سے دیگر کو بھی آگاہ کریں۔
5          ہر تشریف لانے والے صاحب اگر ایک مزید استاد محترم کو ساتھ لائیں تو پروگرامز کی حاضری کو دوگنا کیا جا سکتا ہے۔
6          صوبہ پنجاب کی قیادت کو مزید متحرک ہونے کی ضرورت ہے۔
7          پرنٹ اور الیکٹرانک میڈیا کا آئندہ بھر پور اہتمام کیا جائے کیونکہ جماعتی کاموں کی تشہیر فی زمانہ اور بھی زیادہ ضروری ہو چکی ہے۔
8          ہر سطح کے ذمہ داران بالخصوص صدور وسیکرٹری جنرلز اور ناظمین مالیات کو مزید متحرک ہونے کی ضرورت ہے۔
9          پروگرام کے بعد اس کی رپورٹس اور پوسٹوں کو سوشل میڈیا پر بھر پور انداز میں مشتہر کیا جائے تا کہ مزید احباب بھی استفادہ کر سکیں۔
0          مرکزی سطح کے پروگرامز کی ریڈیو ریکارڈنگ کا اہتمام کر کے اچھے لیکچرز کے کلپس کو بھی عام کیا جائے۔
!          ان پروگرامز میں ڈویژنل‘ ضلعی اور تحصیلی ذمہ داران کی کارکردگی اور کام کا طریقہ کار بھی بیان کیا کریں۔
حرف آخر!
احباب جماعت! اب ہم سب کا اگلا ہدف ان شاء اللہ العزیز بروز اتوار ۳۱ دسمبر ۲۰۱۹ء کا مرکزی کنونشن جو ۱۰۶ راوی روڈ مرکزی دفتر لاہور میں منعقد ہو گا جس میں ان شاء اللہ العزیز گذشتہ سے کم از کم دو گنا زیادہ اہداف ہیں۔ اپنی اپنی سطح پر اس کی تشہیر‘ تیاری‘ دی گئی ذمہ داری اور رابطوں کا بھر پور سلسلہ شروع کر دیا جائے تا کہ ہم سب سرخرو ہو سکیں۔ اللہ تعالیٰ سب کو نیتوں کے خلوص کے ساتھ دین اسلام کا کام کرنے کی توفیق عطا فرمائے۔ آمین!


No comments:

Post a Comment

View My Stats