تینتالیسویں سیرت النبیﷺ کانفرنس خانپور 18-2019 - ھفت روزہ اھل حدیث

Breaking

Saturday, July 27, 2019

تینتالیسویں سیرت النبیﷺ کانفرنس خانپور 18-2019


۴۳ویں سیرت النبیؐ کانفرنس خان پور

تحریر: جناب حمید اللہ خان عزیز
خان پور ضلع رحیم یار خان میں سالانہ سیرت النبیe کانفرنس کا آغاز آج سے ۴۳ سال قبل بطل حریت حضرت مولانا قاری عبدالوکیل صدیقی رحمہ اللہ نے کیا تھا۔ یہ کانفرنس سہ روزہ ہوتی ہے اور ملک بھر میں اہل توحید اور مسلک اہل حدیث کی پہچان بن چکی ہے۔
امسال یہ روح پرور کانفرنس ۲۲، ۲۳، ۲۴مارچ ۲۰۱۹ء کو منعقد ہوئی جس میں حسب روایت ملک بھر سے ممتاز علماء کرام، محدثین، مفکرین، دانشور، خطباء،قراء، شعراء کرام تشریف لائے۔ کانفرنس کا آغاز ۲۲ مارچ بروز جمعۃ المبارک محدث دیار سندھ فضیلۃ الشیخ پروفیسر عبداللہ ناصر رحمانی حفظہ اللہ کے شاندار علمی خطبہ جمعہ سے ہوا ۔
کانفرنس کے پہلے روز مولانا سید امجد شاہ(لاہور)، مولانا قاری محمد عرفان (ڈسکہ)، مولانا حافظ سجاد البشیروی ، مولانا قاری سعید احمد مبارک پوری ، مولانا امین حیدری، مولانا نسیم اکرم یزدانی، مولانا عبدالحق حقانی، مولانا قاری عبدالرحیم کلیم، مولانا قاری سمیع اللہ ساجد، مولانا محمد اسلم حنیف، مولانا عبدالرزاق طاہراور قاری سیف اللہ خالد چتروڑ گڑھی نے خطاب کیا۔
جبکہ دوسرے روز بعد نماز فجر حضرت مولانا انس مدنی کے در س قرآن سے کانفرنس کا آغاز ہوا۔ اس روز کانفرنس کی تین نشستیں ہوئیں جن میں مولانا قاری عمر فاروق صدیقی، مولانا قاری محمد حسین مدنی ، مولانا عتیق الرحمن طاہر ، مولانا محمد اکرم شہزاد، مولانا عبداللہ ساجد شیخوپوری، مولانا اجمل شاکر، مولانا نعمان اصغر، مولانا رانا خلیق خان پسروری، مولانا جمیل اجمل گورائیہ، مولانا قاری یٰسین حیدر، مولانا حافظ مسعود اظہر، مولانا حافظ صہیب شاہد، ڈاکٹر مطیع اللہ باجوہ، پروفیسر ڈاکٹر حماد لکھوی، مولانا محمد اسحاق اوکاڑوی اور قاری محمد یعقوب فیصل آبادی کے خطابات ہوئے۔
اسی طرح تیسرے اور آخری روز مولانا امان اللہ بھٹی کے بعد نماز فجر درس قرآن سے کانفرنس کا آغاز ہوا ۔ تین بھرپور نشستوں میں شیوخ الحدیث اور علماء کرام کے خطابات ہوئے۔ چند نام دیکھئے:
مولانا طارق ضیاء، مولانا یوسف راشد، مولانا سید مختیار احمد شاہ، مولانا وقاص فاروقی، مولانا قاری احمد حسن ساجد، مولانا عبدالرئوف ربانی، مولانا اسماعیل عتیق، مولانا عتیق الرحمن طاہر، مولانا حافظ مقصود احمد، مولانا ابراہیم محمدی، مولانا حافظ عبدالوہاب روپڑی، مولانا فیصل افضل شیخ، مولانا عمر صدیق، مولانا سید سبطین شاہ نقوی، مولانا رانا شفیق خان پسروری، مولانا محمد یوسف پسروری، مولانا عبدالمنان راسخ، مولانا قاری محمد حنیف ربانی ، مولانا قاری بنیامین عابد، مولانا قاری عبدالحفیظ فیصل آبادی حفظھم اللہ تعالیٰ۔
استحکام پاکستان ریلی:
کانفرنس کے دوسرے روز بعد نما ز عصر استحکام پاکستان ریلی نکالی گئی جس کی قیادت مہتمم جامعہ پروفیسر حافظ محمد عامر صدیقی حفظہ اللہ نے کی۔
استحکام پاکستان ریلی جامعہ محمدیہ اہلحدیث کے دفتر سے روانہ ہوئی اور حشمت چوک پہنچ کر ایک بہت بڑے جلسے کی شکل اختیار کر گئی بلامبالغہ ریلی میں ہزاروں افراد اور بے شمار موٹر سائیکلز ،کاریں اور لوڈر ڈالے وغیرہ شامل تھے۔ ریلی کا جگہ جگہ والہانہ عقیدت سے استقبال کیا گیا۔ اس وقت پورے جنوبی پنجاب میں مذہبی اور سیاسی ریلیوں میں خان پور کی استحکام پاکستان ریلی کو ممتاز،منفرد ،مثالی اور وسعت پذیر قرار دیا گیا ہے۔
رئیس الجامعہ پروفیسر حافظ محمد عامر صدیقی حفظہ اللہ نے ریلی کے شرکاء سے خصوصی خطاب کیا۔ انہوں نے اپنی گفتگو میں پاکستان کی تینوں مسلح افواج کے حوصلے اور ہمت کی تعریف کی اور ہندوستان کی جارحیت کا مقابلہ کرنے کیلئے ان کی جراتوں کو سلام پیش کیا ۔ انہوں نے استحکام پاکستان اور اس کی نظریاتی سرحدوں کی حفاظت کیلئے کسی بھی قسم کی قربانی سے دریغ نہ کرنے کے عزم کو بھی دہرایا۔
1         فاضلین جامعہ کی نشست
ہر سال ساڑھے تین سو کے لگ بھگ فضلائے جامعہ اس اہم اجلاس میں شرکت کرتے ہیں ۔ اس اجلاس کو جامعہ محمدیہ اہلحدیث کی شوریٰ کا درجہ حاصل ہے اور اس میں جامعہ کے نظام تعلیم و تربیت کا جائزہ لیا جاتا ہے۔
2         جمعیت اساتذہ پاکستان کی نشست
کانفرنس کے دوسرے روز جمعیت اساتذہ پاکستان کے صدر پروفیسر عتیق اللہ عمر کی صدارت میں جنوبی پنجاب کے اساتذہ کا ایک خصوصی اجلا س منعقد ہوا جس میں صدر جمعیت اساتذہ پاکستان نے ان کے سامنے جمعیت کے منشور اور دعوتی لائحہ عمل سے آگاہ کیا ۔تمام شرکاء نے جنوبی پنجاب میں اساتذہ کی تنظیم سازی کیلئے ساتھ دینے کا کامل یقین دلایا۔
3         سوالات و جوابات کی خصوصی نشست
خانپور کی اس کانفرنس کا ایک خاص پروگرام سوالات و جوابات کی ایک خصوصی نشست کی شکل میں ہوتا ہے ۔ اس مرتبہ نشست کیلئے فضیلۃ الشیخ مولانا محمد ابراہیم بھٹی حفظہ اللہ (کراچی) اور فضیلۃ الشیخ مولانا عبدالرحمن شاہین حفظہ اللہ تشریف لائے اور اس علمی مجلس کو رونق بخشی۔
4         خواتین کی تبلیغی نشست
کانفرنس کا ایک اہم پروگرام خواتین کی خصوصی مجلس کے حوالے سے ہوتا ہے ۔ خواتین کے پنڈال جامعہ محمدیہ للبنات میں خواتین مبلغات تقاریر کرتی ہیں اور فارغ التحصیل طالبات میں اسناد و انعامات تقسیم کئے جاتے ہیں۔
5         تقریب تقسیم اسناد و دستار فضیلت
کانفرنس کا ایک گوشہ تقسیم اسناد و دستار فضیلت کے حوالے سے منعقد کیا جاتا ہے جس میں جید شیوخ و مہمانان ذی وقار کے ہاتھوں فارغ التحصیل ہونے والے علماء کرام کو اسناد اور دستار فضیلت عطا کی جاتی ہے ۔امسال پچاس علماء کرام نے سند فراغت اور دستارفضیلت حاصل کی اور انہیں فضیلۃ الشیخ مولانا عبدالمالک مجاہد حفظہ اللہ ( ڈائریکٹر دارالسلام ریاض) اور فضیلۃ الشیخ ابراہیم خلیل الفضلی حفظہ اللہ کے ہاتھوں اسناد اور انعامات دئیے گئے۔
6         آل پارٹیز کانفرنس
ہر سال سیرت النبی e کانفرنس کے موقع پر آ ل پارٹیز کانفرنس کا انعقاد کیا جاتا ہے ۔جسمیں عالم اسلام کو درپیش چیلنجز کے حوالے سے کسی خاص موضوع پر بحث کی جاتی ہے۔ اس مرتبہ سانحہ کرائسٹ چرچ موضوع گفتگو تھا ۔ اس میں فضیلۃ الشیخ مولانا عبدالمالک مجاہد، فضیلۃ الشیخ ابراہیم خلیل الفضلی ، الشیخ رانا شفیق خاں پسروری، مولانا فیصل افضل شیخ نے جماعت کی نمائندگی کی۔
خان پور کی سالانہ سیرت النبی e کانفرنس اسلام پسند اور محب وطن سلفیوں کا ایسا اجتماع ہے جس سے اسلام کی روح کا ادراک ہوتا ہے ،فرقہ واریت کی حوصلہ شکنی ہوتی ہے ۔کانفرنس میں پورے جنوبی پنجاب سے لوگ جوق درجوق شرکت کرتے ہیں ۔راجن پور، ڈیرہ غازی خان ،ملتان، بہاولپور ،بہاولنگر،رحیم یار خان ،خانیوال سے خصوصی قافلے بسوں کی صورت میں شریک ہوتے ہیں ۔ اسی طرح اندرون سندھ سکھر، نواب شاہ، حیدرآباد، کراچی کے احباب جماعت خان پور کو اپنا روحانی مرکز اور تبلیغی جولان گاہ سمجھتے ہوئے اپنی والہانہ عقیدت اور محبت کے اظہار سے بھرپور شرکت کرتے ہیں ان کی یہ محبت نظم جماعت کے تابع نہیں بلکہ وارفتگی کا یہ عالم مرکز اہلحدیث خان پور اور حضرت بطل حریت قاری عبدالوکیل صدیقی  ؒ کی علمی شخصیت کی وجہ سے ہے۔
خان پور کی سہ روزہ سالانہ سیرت النبی e کانفرنس تمام اہل توحید اہلحدیث جماعتوں کا متفقہ اور مشترکہ پلیٹ فارم بن چکی ہے ۔ کانفرنس کے موقع پر دور دراز سے آئے علماء کرام اور تمام شرکاء کیلئے کھانے کا خصوصی اور وافر انتظام کیا جاتاہے۔
پروفیسر حافظ محمد عامر صدیقی حفظہ اللہ کا اظہار تشکر:
محترم پروفیسر حافظ محمد عامر صدیقیd کانفرنس میں شرکاء کے نام پیغام پیش کرتے ہیں۔ وہ کانفرنس کے شرکاء سے اظہار تشکر کررہے تھے۔ انہوں نے کہاکہ کانفرنس اور تاریخ ساز ریلی کے انعقاد پہ میں جامعہ محمدیہ اہلحدیث کے تمام محبین، مخلصین،فاضلین، رفقاء، اساتذہ، طلبہ اور کارکنان کو مبارک بادپیش کرتاہوں ۔ یہ اللہ پاک کا ہم پر خاص احسان اور کرم ہے کہ اس نے ہمیں تاریخ ساز کامیابی عطا فرمائی ۔ یہ سب ہمارے مربی حضرت مولانا قاری عبدالوکیل صدیقی  ؒ کی اخلاص بھری سعی مسلسل اور جہد کا نتیجہ ہے ۔


No comments:

Post a Comment