امام کعبہ کا مرکز اھل حدیث ورود مسعود 19-2019 - ھفت روزہ اھل حدیث

Breaking

Saturday, July 27, 2019

امام کعبہ کا مرکز اھل حدیث ورود مسعود 19-2019

قرآن کا پیغام عام کر کے ہر قسم کی جہالتوں کا مقابلہ کیا جا سکتا ہے: الشیخ ڈاکٹر عبداللہ عواد الجہنی کا تقریب سے خطاب
امام کعبہ فضیلۃ الشیخ ڈاکٹر عبداللہ عواد الجہنیd پاکستان سے محبتیں سمیٹ کر واپس حرمین شریفین پہنچ گئے ہیں۔ امام کعبہ کو اہل پاکستان سے جو محبت اور پیار ملا اور جس طرح ان کا فقید المثال اور پر تپاک استقبال کیا گیا اس کی نظیر نہیں ملتی۔ لاہور کے فرزندان توحید کی حالت تو اس شعر کے مصداق تھی۔   ؎
دل محو انتظار ہے آنکھیں ہیں فرش راہ
آؤ کبھی تو چاہنے والوں کے شہر میں
اسلام آباد اور لاہور میں انہوں نے مختلف تقریبات سے خطاب کے علاوہ اعلیٰ سیاسی وعسکری قیادت سے ملاقاتیں کیں۔ لاہور میں اپنے قیام کے دوران انہوں نے مرکز اہل حدیث ۱۰۶ راوی روڈ میں پیغام قرآن ٹی وی چینل کا افتتاح کیا۔
اس موقع پر انہوں نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پیغام قرآن ٹی وی چینل کے اجراء کو خوش آئند قرار دیا اور کہا کہ کلام الٰہی کی نشر واشاعت کرنے والے لوگ خوش قسمت ہیں۔ دین اور دینی اقدار سے دوری کے باعث ہماری اسلامی تہذیب اپنی شناخت اور تشخص کھو رہی ہے اس یلغار کے آگے بند باندھنے کی ضرورت ہے۔ قرآن کا پیغام عام کر کے ہم ہر قسم کی جہالتوں کا مقابلہ کر سکتے ہیں۔ قرآن کی تلاوت سے گم راہوں کو ہدایت اور بیماروں کو شفا میسر آتی ہے۔ یہ ایسا ساتھی ہے جو کبھی بے وفائی نہیں کرتا۔ یہ ایسا ہمسفر ہے جو کبھی تنہا نہیں چھوڑتا۔ دنیا‘ قبر اور میدان محشر میں ہر جگہ بھر پور ساتھ دیتا ہے۔ قرآن پاک ایسا دوست ہے جس کی دوستی روز قیامت بھی کام آئے گی۔ اس پر عمل پیرا ہونے سے پستی بلندی میں‘ جہالت علم میں‘ اندھیرا اجالے میں اور زوال عروج میں بدل جاتا ہے۔ یہ ایسا شفیع ہے جس کی شفاعت قبول کی جائے گی۔ جب اللہ تعالیٰ نے ہمیں یہ عظمت وبرکت‘ ہدایت ونور اور شفاء ورحمت والی کتاب عطا فرمائے ہے تو ضرورت اس امر کی ہے کہ ہم اسے محبت سے پڑھیں‘ پڑھنا نہیں جانتے تو پڑھنا سیکھیں اور سیکھنے میں کسی قسم کی جھجک محسوس نہ کریں۔ پڑھنا سیکھ لیں تو سمجھنے کی کوشش کریں۔ اس کا بہترین طریقہ یہ ہے کہ قرآن مجید کا ترجمہ پڑھیں اور اسے سمجھ کر اس کے مطابق عمل کریں تا کہ دنیا وآخرت کی کامیابی حاصل ہو سکے۔ امام کعبہ نے کہا کہ رمضان المبارک مسلمانوں کے لیے اللہ تعالیٰ کا خاص تحفہ اور تمام مہینوں کا سردار ہے۔ اس کی آمد کا ابھی سے اہتمام شروع کر دیں اور رمضان میں صدقات وخیرات کا اہتمام کریں۔
الشیخ ڈاکٹر عبداللہ عواد جہنیd کو حرمین شریفین کا امام ہونے کے ساتھ ساتھ قرآن کریم کی پر سوز تلاوت کے حوالے سے بھی پورے عالم اسلام میں محبوبیت کا مقام حاصل ہے۔ مسلمان جہاں بھی بستے ہیں حرمین شریفین کے ائمہ کرام کے ساتھ گہری عقیدت ومحبت رکھتے ہیں۔ ان سے قرآن کریم کی تلاوت سننے کے ساتھ ساتھ ان کے پیچھے نماز کی ادائیگی کو باعث سعادت سمجھتے ہیں۔ فرزندان توحید نے دل کی گہرائیوں سے انہیں اہلا وسہلا ومرحبا کہا۔ امام محترم کی آمد سے پاکستانی فضاء معطر ومنور رہی۔ وطن کی فضاؤں میں اتحاد ویگانگت‘ امن وسکون کی باد نسیم چلتی رہی۔ دین سے محبت رکھنے والوں کے چہرے امام محترم کی آمد کے باعث کھل اٹھے۔ امام صاحب کی آمد سے قرآن وسنت کے حاملین کو نئی تقویت اور حوصلہ ملا‘ مدارس ومکاتب کے طلبہ‘ ائمہ کرام اور خواص وعوام میں جذبہ عقیدت کو نئی جلا ملی۔ پاکستان اور سعودی عرب کے تعلقات میں دراڑیں ڈالنے والے خواب ہمیشہ کی طرح چکنا چور ہوئے۔ منفی قوتوں کے عزائم اسی وقت خاک میں مل گئے جب پاکستان کی سیاسی وعسکری قیادت نے حرمین شریفین کے دفاع اور سعودی عرب کی سالمیت کی خاطر اسلامی عسکری اتحاد میں شامل ہو کر مثالی کردار ادا کرنے کا فیصلہ کرتے ہوئے تمام استعماری قوتوں کو یہ پیغام دیا کہ ’’سعودی عرب کی سالمیت پر حملہ پاکستان کی سالمیت پر حملہ تصور کیا جائے گا۔‘‘
مرکزی جمعیت اہل حدیث پاکستان کے سربراہ سینیٹر پروفیسر ساجد میرd نے پیغام قرآن ٹی وی کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حرمین شریفین کی سرزمین کے خلاف سازشوں اور دھمکیوں کے مقابلے میں سعودی عرب کے ساتھ مکمل یکجہتی کا اظہار کرتے ہیں۔ ہم پوری طاقت کے ساتھ سعودی عرب کے ساتھ کھڑے ہیں۔ عالمی امن کے استحکام کے سلسلے میں سعودی عرب کے عظیم الشان کردار اور اس کے مقام ومرتبے کو زک پہنچانے کی ہی سازش کو مسترد کرتے ہیں۔ پوری دنیا میں سعودی عرب بلند مقام پر فائز ہے۔ یہ اسلام اور اس کے پیروکاروں کا قبلہ‘ میانہ روی اور اعتدال پسندی کا علمبردار‘ پر امن بقائے باہمی‘ مکالمے اور رواداری کا پرچار ہے۔
امام کعبہ نے اپنے دورے کے دوران مختلف مکاتب فکر کے علماء اور سیاسی ومذہبی قائدین سے بھی ملاقاتیں کیں جس سے پوری دنیا میں اتحاد بین المسلمین کا خوشگوار پیغام گیا ہے۔ لاہور میں پروفیسر ساجد میرd کی طرف سے عشائیہ تقریب میں سعودی سفیر نواف بن سعید المالکی‘ امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق‘ جمعیت علمائے اسلام کے امیر مولانا فضل الرحمن‘ جمعیۃ علمائے پاکستان کے صدر پیر اعجاز ہاشمی‘ چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ جسٹس سردار شمیم احمد خاں‘ جماعت اسلامی کے سیکرٹری جنرل لیاقت بلوچ‘ حافظ ابتسام الٰہی ظہیر‘ قاری ابراہیم میر محمدی‘ شیخ الحدیث حافظ مسعود عالم‘ شیخ الحدیث حافظ محمد شریف‘ قاری صہیب احمد میر محمدی‘ پیر محفوظ مشہدی‘ مولانا امجد خاں‘ مفتی محمد خاں لغاری‘ اسلامی نظریاتی کونسل کے ممبر علامہ محمد شفیق خاں پسروری‘ ڈاکٹر عبدالغفور راشد‘ مجیب الرحمن شامی‘ ایثار رانا‘ مولانا نعیم بٹ‘ ڈاکٹر رضوان نصیر ڈی جی ۱۱۲۲ سمیت دیگر نے شرکت کی۔
پیغام ٹی وی کا اجراء حالیہ دور میں الیکٹرانک میڈیا کے میدان میں عظیم کارنامہ ہے۔ آج سے نو سال قبل شروع ہونے والا پیغام ٹی وی اب دو زبانوں اردو اور پشتو میں نشریات پیش کر رہا ہے۔ امام کعبہ معالی الشیخ ڈاکٹر عبدالرحمن السدیس d اس کے چیئرمین ہیں جبکہ دنیا بھر سے نامور شخصیات اس کے بورڈ آف ڈائریکٹرز میں شامل ہیں۔ آج عوام میں اپنی مقبولیت کے باعث پیغام ٹی وی پاکستان کے معتبر دعوتی وتبلیغی وصحافتی وسماجی حلقوں کے لیے ایک مؤثر پلیٹ فارم بن چکا ہے۔ اس وقت پیغام ٹی وی‘ سیٹلائٹ پر پاکستان سمیت ۶۵ سے زائد ممالک میں اور انٹرنیٹ‘ موبائل ایپلی کیشنز پر لائیو سٹریمنگ کے ذریعے دنیا بھر میں دیکھا جا رہا ہے۔ سوشل میڈیا پر روزانہ وزٹرز کی تعداد لاکھوں تک پہنچ چکی ہے جبکہ پیغام ویب سائٹ سے استفادہ کرنے والوں اور روزانہ آن لائن فتویٰ کے ذریعے اپنی اصلاح کرنے والوں کی تعداد بھی لاکھوں میں ہے۔ پیغام ٹی وی کو یورپ کے ناظرین تک پہنچانے کے لیے سیٹلائٹ کا حصول ہے اور وہ خواب بھی پورا ہو گیا ہے کہ ایک ایسے ٹی وی کا اجراء جس پر سارا دن ائمہ حرمین کی تلاوت اردو ترجمے کے ساتھ جاری رہے وہ آج پورا ہو گیا۔ پیغام قرآن ٹی وی چینل کا اجراء اس بات کا منہ بولتا ثبوت ہے کہ دعوت دین کی نشر واشاعت کا د ائرہ مزید پھیل رہا ہے۔ کتاب وسنت کی دعوت بھی گھر گھر پہنچ رہی ہے۔


No comments:

Post a Comment