انٹرویو: ناظم اعلیٰ پنجاب ... مولانا عبدالرشید حجازی 36-2019 - ھفت روزہ اھل حدیث

Breaking

Wednesday, October 02, 2019

انٹرویو: ناظم اعلیٰ پنجاب ... مولانا عبدالرشید حجازی 36-2019


انٹرویو:  ناظم اعلیٰ پنجاب ... مولانا عبدالرشید حجازی﷾

بشکریہ: بزنس ڈیلی رپورٹ ... فیصل آباد
مرکزی جمعیت اہلحدیث پاکستان کے ناظم اعلیٰ پنجاب مولانا عبدالرشید حجازی فیصل آبادکے نواحی گائوں ۱۷۱ گ ب بمبو ذیل گجراں کے ایک متوسط کاشتکار گھرانے میں پیدا ہوئے۔ ایف اے تک تعلیم حاصل کرنے کے بعد جامعہ تعلیم الاسلام ماموں کانجن کی ذیلی شاخ ۳۶ گ ب میں دینی تعلیم کے مراحل طے کئے۔ اس کے ساتھ ساتھ جامعہ سلفیہ میں بھی تعلیم حاصل کرنے آئے، بعد ازاں جامعہ تعلیم الاسلام ماموں کانجن چلے گئے جہاں پر سب سے پہلے انجمن اہلحدیث کے رکن مقرر ہو کر شعبہ تبلیغ سے منسلک ہوئے اور اپنی ذمہ داریوں کو بخوبی انجام دیتے رہے۔ ۱۹۹۶ء میں ان کے پیش رو ناظم جامعہ مولانا قاضی محمد اسلم سیف کی وفات کے بعد جامعہ تعلیم الاسلام ماموں کانجن کاناظم مقرر کر دیا گیا اور اب تک اپنی ذمہ داریاں احسن طریقے سے نبھا رہے ہیں۔ مولانا عبدالرشید حجازی ۱۹۸۲ء میں مرکزی جمعیت اہلحدیث فیصل آباد کے آرگنائزر مقرر ہوئے، بعد ازاں ضلعی ناظم مقرر ہوئے اور عرصہ ۲۵سال سے ضلعی امیر کی حیثیت سے ذمہ داریاں انجام دے رہے ہیں۔ بہتر انداز میں فرائض سر انجام دینے پر نگران اہلحدیث یوتھ فورس پاکستان مقرر ہوئے اس کے بعد نائب ناظم اعلیٰ، ناظم تبلیغ پاکستان، نائب امیر رہے، گذشتہ ایک سال سے پنجاب کے ناظم اعلیٰ کی حیثیت سے فرائض انجام دے رہے ہیں۔ اس حوالے سے مرکزی جمعیت اہلحدیث پاکستان کے صوبائی ناظم اعلیٰ مولانا عبدالرشید حجازی سے ایک نشست ہوئی جو نذر قارئین ہے۔
انہوں نے کہا کہ مرکزی جمعیت اہلحدیث بنیادی طور پر دعوت و تبلیغ کی جماعت ہے، اس کا مشن لوگوں کو اللہ سے جوڑنا ، حضور نبی کریم ؐ کی محبت کو اجاگر کرنا اور لوگوں کو اس طرف راغب کرنا ہے۔ مرکزی جمعیت اہلحدیث کو مختلف شعبہ جات میں تقسیم کیا گیا ہے اور ہر شعبہ قائد امت سلفیہ سینیٹر پروفیسر ساجد میر امیر مرکزی جمعیت اہلحدیث پاکستان کی زیر نگرانی اپنے فرائض بخوبی انجام دے رہا ہے۔ شعبہ نشرو اشاعت کے تحت جماعت نے پیغام ٹی وی چینل کے نام پر امت کی اصلاح کا بیڑہ اٹھا رکھا ہے، لوگ بھی بخوبی آگاہ ہیں کہ یہ چینل کسی ایک مکتب فکر کی نمائندگی نہیں کرتا بلکہ تمام مکاتب فکر کی نمائندگی کرتا ہے اور کبھی فرقہ واریت کی بات نہیں کی جاتی بلکہ اللہ اور اس کے رسول کے احکامات کے مطابق لوگوں کو زندگی گزارنے کی ترغیب دی جاتی ہے، جہاں پر تمام مکاتب فکر کے علماء کرام کو مدعو کیا جاتا ہے جبکہ دوسرا شعبہ خدمت خلق ہے جوکہ الاحسان فائونڈیشن کے نام پر کام کر رہا ہے جہاں خدمت خلق کے جذبہ سے سرشار نوجوانوں کی بڑی تعداد فرائض انجام دیتی ہے جس کے تحت یونین کونسل کی سطح پر ڈسپنسریاں،ایمبولینس سروس، چھوٹے ہسپتال لوگوں کی فلاح و بہبود کے لیے سر گرم ہیں۔ چھوٹے ہسپتالوں،ڈسپنسریوں اور دیگر طبی سہولیات کی فراہمی کے لیے مقامی سطح پر ممبران و اکابرین مرکزی جمعیت اہلحدیث از خود ان کا انتظام کرتے ہیں جبکہ ان کی مکمل نگرانی مرکزی جمعیت اہلحدیث کرتی ہے جبکہ جماعت کے امیر سینیٹر علامہ پروفیسر ساجد میر کے نام پر موبائل ہسپتال بھی چلایا جا رہا ہے جو کہ ملک میں کسی بھی جگہ قدرتی آفت، زلزلہ، سیلاب کی صورت میں لوگوں کو فوری اور ہنگامی صورتحال کے پیش نظر اس علاقہ میں پہنچ کر ان کی پوری ٹیم لوگوں کی مدد کرتی ہے اور یونین کونسل سے لیکر صوبائی اور قومی سطح پر بھی مرکزی جمعیت اہلحدیث سے وابستہ افراد اپنی مدد آپ کے تحت تمام امور انجام دیتے ہیں۔ صوبائی ناظم اعلیٰ مولانا عبدالرشید حجازی نے بتایا کہ ان کی جماعت تنظیمی اعتبار سے ہمیشہ جمہوری اقدار کی روایات کی حامل رہی ہے، ہر چار سال بعد تحصیل سے لیکر مرکز تک باقاعدہ انتخابات کروائے جاتے ہیں اور اسی حوالے سے موقع کی مناسبت سے خفیہ رائے شماری یا شو آف ہینڈز دونوں طریقے استعمال کئے جاتے ہیں جبکہ جماعت کا سب سے پاور فل ادارہ مرکزی مجلس شوریٰ ہے جس میں ملک بھر کے ۵ سو سے زائد افراد نمائندگی کرتے ہیں ، مجلس شوریٰ واحد ادارہ ہے جو نچلی سطح سے مرکز تک مکمل احتساب کا حق رکھتا ہے۔ مولانا عبدالرشید حجازی نے کہا کہ ختم نبوت کا معاملہ ہمارے مذہب اسلام کا بنیادی عقیدہ ہے کہ حضور نبی کریمe اللہ کے آخری نبی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حیران کن معاملہ تو یہ ہے کہ وزیر اعظم پاکستان عمران خان اور آرمی چیف کے دورہ امریکہ کے دوران ایک عبدالشکور نامی قادیانی کی امریکہ کے صدر ٹرمپ تک رسائی ہو جاتی ہے بلکہ باقاعدہ ملاقات کرتا ہے اور اسکی ترجمانی کے لئے سابق گورنر سلیمان تاثیر کا بیٹا بھی اس کے ہمراہ ہوتا ہے‘ اس سے خدشہ ظاہر ہورہا ہے کہ وزیر اعظم کے دورہ کے دوران در پردہ ہدایات نہ دی جائیں جس سے ملک کو نقصان پہنچے تاہم ختم نبوتؐ کے حوالے سے تمام مذہبی ودینی جماعتیں متفقہ اور مشترکہ جدوجہد کرتی رہی ہیں اور کرتی رہیں گی۔ اگر کسی نے اس مسئلہ کو چھیڑا تو مسلمان اپنی جان قربان کرنے سے بھی دریغ نہیں کرینگے‘ کیونکہ حضور نبی کریم ؐ کی محبت ناموس رسالت ؐ اور ختم نبوت ؐ ہر مسلمان کو اپنی جان سے زیادہ عزیز ہے۔مولانا عبدالرشید حجازی نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کے لئے آرٹیکل ۳۷۰ اور ۳۵ اے کو ختم کرنے کا اعلان عالمی قوانین کی خلاف ورزی ہے اس سے بھارت کا مکروہ چہرہ بے نقاب ہو گیا ہے۔ مرکزی جمعیت اہلحدیث پاکستان اپنے کشمیری بھائیوں کیلئے سب کچھ قربان کرنے کو تیار ہے۔ہندوستان کی طرف سے کشمیریوں پر ظلم و بربریت کی انتہا کر رکھی ہے اور اب تو انڈیا کی جانب سے مقبوضہ کشمیر میں مزید فوج تعینات کرکے نہتے کشمیریوں کو شہید کیا جا رہا ہے، اس کی وجہ یہ ہے کہ مسئلہ کشمیر عالمی فورم پر بھر پور طریقے اٹھایا نہیں جا رہا۔ وزیر اعظم عمران خان کے دورہ امریکہ کے دوران امریکی صدر ٹرمپ کی مسئلہ کشمیر پر ثالثی کی پیشکش ہندوستان کے لیے بہت تکلیف دہ ثابت ہوئی جس پر بھارت نے کشمیریوں پر ظلم کی انتہاکر رکھی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم سمجھتے ہیں کہ کشمیر کے بغیر پاکستان نامکمل ہے، کشمیر پاکستان کی شہ رگ ہے اور یہ مسئلہ ہمارے ترجیحی مسئلوں میں سے ایک ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کی طرف سے سیاسی معاشی ترقی کے لیے جامع حکمت عملی نہ ہونے سے روپے کے مقابلہ میں ڈالر کی قدر میں روز بروز اضافہ ہو رہا ہے جسکی وجہ سے مہنگائی بڑھتی جارہی ہے۔ موجودہ حکومت سے توقع کی جارہی تھی کہ عوام کو ریلیف ملے گا مگر مقام افسوس کہ مہنگائی میں اضافہ سے غریب غریب‘ تر ہو رہا ہے ۔ غریب کا چولہا جلاناحکومت کی ذمہ داری ہے مگر حکمران صبر کی تلقین کررہے ہیں‘ اس کے برعکس اسمبلیوں میں بیٹھے افراد کی مراعات میں اضافہ کیا جا رہا ہے۔ مولانا عبدالرشید حجازی نے اپنے پیغام میں کہا کہ موجودہ مشکل ترین حالات میں وحدت امت کا خیال رکھتے ہوئے تمام دینی اور مذہبی جماعتوں کو ایک پلیٹ فارم پر اکٹھے ہونا چاہیے، آج کل سیاستدانوں پر جس طرح غلاظت اور کیچڑ اچھالا جا رہا ہے ، موجودہ کلچر کی تبدیلی کے لیے با صلاحیت اور قابل لوگوں کو آگے آنا چاہیے تا کہ جو دولت ، پیسہ کی وجہ سے اسمبلیوں تک نہیں پہنچ سکے ان کو بھی موقع مل سکے۔اس موقع پر مولانا بہادر علی سیف سینئر نائب امیر ضلع فیصل آباد،ڈاکٹر طارق عباس چوہدری ناظم ضلع فیصل آباد،خالد محمود اعظم آبادی سیکرٹری اطلاعات و نشرواشاعت ضلع فیصل آباد اورصاحبزادہ حافظ بابر فاروق رحیمی ناظم اعلیٰ مرکزی جمعیت اہلحدیث لاہوربھی موجود تھے۔


No comments:

Post a Comment