رپورٹ نماز جنازہ جناب بشیر انصاری رحمہ اللہ 20-18 - ھفت روزہ اھل حدیث

تازہ ترین

Tuesday, September 15, 2020

رپورٹ نماز جنازہ جناب بشیر انصاری رحمہ اللہ 20-18

ھفت روزہ اھل حدیث، شمارہ نمبر 18، رپورٹ نماز جنازہ، مدیر اعلیٰ، بشیر انصاری

رپورٹ نماز جنازہ جناب بشیر انصاری رحمہ اللہ

رپورٹ: جناب مولانا محمد ابرار ظہیر
جناب مولانا بشیر انصاری گزشتہ چند دنوں سے تشویش ناک حالت میں گوجرانوالہ کے مقامی ہسپتال میں ایڈمٹ تھے۔ جمعرات کی شام کو راقم الحروف اور جناب بشیر انصاریؒ کے مخلص دوست شیخ الحدیث مولانا محمد عبد اللہؒ کے بڑے صاحبزادے جناب میاں مجیب الرحمان کے ہمراہ ان کی عیادت کیلئے حاضر ہوا۔آکسیجن لگی ہوئی تھی، راقم الحروف نے آگے ہو کر آواز دی کہ کیا مجھے پہچانا ہے، تو سر ہلا کر تصدیق کی، کچھ کہنا چاہتے تھے مگر آکسیجن اور نقاہت کی بناء پر کہہ نہیں پائے۔ جمعہ کے دن تمام علمائے شہر کو ایک میسیج کے ذریعے جناب بشیر انصاری صاحب کی جلد صحت یابی کی دعا کی درخواست کی مگر جمعہ ۴ ستمبر ۲۰۲۰ء کی دوپہر کو تقریبا ۳۰:۱ پر عین اس وقت جب شہر گوجرانوالہ سمیت ملک بھر میں آپ کی صحت یابی کی دعائیں کی گئیں اللہ کا فیصلہ غالب رہا اور جناب انصاری ؒ اپنا وقت مستعار مکمل کر کے ہمیں داغ مفارقت دے گئے۔چونکہ مولانا بشیر انصاریؒ کے صاحبزادے بیرون ملک مقیم تھے، تشویش ناک صحت کی خبروں کے بعد وہ واپسی کے لئے رخت سفر باندھ چکے تھے، مگر انہیں ٹکٹ  ہفتے کے دن کی ملی، لہٰذا اہل خانہ نے باہمی مشاورت کے بعد مولانا کی نماز جنازہ کے لئے اتوار ۶ ستمبر کی صبح ۱۰ بجے کا وقت مقرر کیا۔
اتوار کے دن صبح سے ہی علمائے کرام اور احباب جماعت سمیت ان کے خاندان کے اکابر اصاغر، سیاسی وسماجی شخصیات کی آمد شروع ہو گئی۔ تقریباََ ساڑھے نو بجے امیر محترم قائد اہلحدیث سینیٹر پروفیسرساجد میرd بھی تشریف لے آئے۔یہ دن حضرت الامیر کی شدید مصروفیات کا دن تھا۔ لاہور میں نہ صرف مرکزی کابینہ کی ایک میٹنگ تھی بلکہ اسی دن مرکز اہلحدیث میں سعودی عرب کے سفیر جناب نواف بن سعید المالکی کی تشریف آوری بھی تھی۔ مگر اپنے عظیم اور وفادار ساتھی کو الوداعی دعائوں سے رخصت کرنے کیلئے امیر محترم تشریف لائے۔تقریباََپونے دس بجے جناب انصاریؒ صاحب کا جسد خاکی گھرسے اٹھایا گیا اور جانب منزل سفر شروع ہوا۔
نماز جنازہ سے قبل امیر پنجاب مولانا عبد الرشید حجازیd نے تعزیتی کلمات میں پوری جماعت کی طرف سے  انصاری صاحب کے صاحبزادوں اور جملہ اہل خانہ سے تعزیت کی۔ انصاری صاحب کی خدمات کو زبردست الفاظ میں خراج تحسین پیش کیا، نماز جنازہ سے قبل جناب بشیر انصاری صاحب کے چھوٹے صاحبزادے جناب مولاناشاھد بشیر انصاری صاحب نے رقت آمیز انداز میں اپنے والد کی طرف سے معافی کی درخواست پیش کی اور کہا کہ اگر ابا جی نے کسی کے کوئی پیسے دینے ہیں تو بلا جھجھک ہم سے رابطہ کر سکتا ہے۔ لیکن اگر کسی نے ہمارے ابا جی کے کوئی پیسے دینے ہیں تو والد محترم ہمیں کہہ گئے کہ ’’میں نے معاف کر دیا ہے‘‘۔اب ہمارے والد صاحب کا کوئی قرض کسی کے ذمے نہیں۔ پھر امیر محترم نماز جنازہ کی امامت کیلئے آگے تشریف لائے۔غم کی کیفیت یہ تھی کہ کچھ بھی جذبات کااظہارنہ فرما سکے۔رقت آمیز اندا ز میں اپنے رفیق خاص کیلئے بہت سی دعائیں کیں۔ دوران نماز جنازہ کئی بار آواز رندھ گئی۔
نماز جنازہ میں مرکزی سینئر نائب ناظم اعلیٰ مولانا محمد نعیم بٹ، مرکزی نائب امیر پروفیسر حافظ عبد الستار حامد، امیر پنجاب مولانا عبد الرشید حجازی،ناظم اعلیٰ پنجاب مولاناحافظ یونس آزاد،قائد تحریک دعوت توحید مولانامیاں محمد جمیل،سابق وفاقی وزیرعثمان ابراہیم،چیئر مین یونین کونسل اسلم انصاری، امیر سٹی علامہ سعید کلیروی، سرپرست مولانا محمد صادق عتیق، حافظ عمران عریف، امیر ضلع سیالکوٹ مولانا عبد الحفیظ مظہر، صوبائی صدر اہلحدیث یوتھ فورس حافظ سلمان اعظم ،معاون مدیر اہلحدیث جناب مولانا عبد اللہ بخش سمیت سینکڑوں علما، سیاسی و سماجی شخصیات نے شرکت کی۔
دریں اثناء مرکزی جمعیت اہلحدیث پاکستان کے ناظم اعلیٰ اور سابق وفاقی وزیر سینیٹرڈاکٹر حافظ عبد الکریم بھی جناب بشیر انصاری صاحب کی وفات پر تعزیت کے کیلئے ان کے گھر آئے اورمولانا بشیر احمد انصاری کی وفات پر ان کے صاحبزادوں سے اظہار کرتے ہوئے مرحوم کی خدمات کو زبردست الفاظ میں خراج تحسین پیش کیا۔ سینیٹرڈاکٹرحافظ عبد الکریم حفظہ اللہ نے کہا کہ بشیر انصاری مرحوم جیسی شخصیات صدیوں بعد پیدا ہوتی ہیں، انہوں نے ساری زندگی دین کی خدمت کی ہے۔شعر وا دب اور نثر نگاری میں وہ اپنی مثال آپ تھے۔ ہم انہیں ہمیشہ یاد رکھیں گے، ان کی خدمات بھلائے جانے کے قابل ہی نہیں۔ وہ نہ صرف مرکزی جمعیت اہلحدیث کا بلکہ ملک وملت کا ایک قیمتی اثاثہ تھے۔
اس موقع پر مولانا بشیر انصاری کے تینوں صاحبزادے خالد،طارق اور شاہد بشیر انصاری سمیت مرکزی جمعیت اہلحدیث سٹی کے سرپرست مولانا صادق عتیق، امیر علامہ سعید کلیروی اور دیگر عہدیداران بھی موجود تھے۔انہوں نے کہاکہ مولانا بشیر انصاری کی صحافتی اور دینی خدمات ہمیشہ یاد رکھی جائیں گی۔نیز مرکزی جمعیت اہلحدیث پاکستان کے ناظم ذیلی تنظیمات جناب پروفیسر ڈاکٹر عبد الغفور راشد بھی تعزیت کے لئے انصاری صاحب کے گھر تشریف لائے، مرحوم کی خدمات کا تذکرہ کیا اور دعائے مغفرت و رفع درجات کی۔
http://www.noorequraan.live/


No comments:

Post a Comment

Pages