ہم مسافر ہیں عمر بھر کے 20-20 - ھفت روزہ اھل حدیث

تازہ ترین

Tuesday, September 29, 2020

ہم مسافر ہیں عمر بھر کے 20-20

ھفت روزہ اھل حدیث، مسافر ہیں عمر بھر کے، ہم مسافر ہیں عمر بھر کے، جمعیۃ اساتذہ پاکستان


ہم مسافر ہیں عمر بھر کے

صدر جمعیۃ اساتذہ پاکستان پروفیسر حافظ عتیق اللہ عمر کے دورہ جات

ہم ۷ بجے لاہور سے روانہ ہوئے ۸ بجے کامونکی پہنچے۔ ہمارے ساتھ مرید کے سے حافظ عطاء الرحمن عامر بھی مل گئے۔ لاہور سے پروفیسر حافظ عثمان ظہیر بھی ساتھ تھے۔ گوجرانوالہ سے ضلعی سیکرٹری جنرل عبدالغفار قمر بھی کامونکی پہنچ گئے۔ تحصیل کامونکی کے صدر عبدالرزاق صاحب اپنے ساتھیوں کے ہمراہ موجود تھے‘ اجلاس ہوا‘ اہم فیصلے ہوئے۔ وہاں سے نوشہرہ ورکاں پہنچے‘ تحصیل نوشہرہ کا اجلاس ہوا اور پر تکلف ظہرانہ کا انتظام تھا۔ وہاں سے روانگی گوجرانوالہ کی طرف ہوئی۔ عصر کی نماز صدیقیہ مسجد ماڈل ٹاؤن میں ہوئی۔ ضلعی جمعیۃ کا اجلاس ہوا جس میں شہر کی قیادت مولانا ابرار ظہیر‘ مولانا صادق عتیق‘ پروفیسر سعید کلیروی ودیگر جماعتی بزرگ تھے۔ مغرب کی نماز وزیر آباد پروفیسر حافظ عبدالستار حامدd کی مسجد میں اور درس قرآن ہوا۔ وہاں گوہر مستجاب صاحب اور ضلعی ناظم مولانا ابراہیم محمدی‘ مولانا سلمان اسحاق اور دیگر اساتذہ سے ملاقات ہوئی۔

یہ پڑھیں:    مرکزی جمعیت اہل حدیث پاکستان کی شوریٰ کا انتخابی اجلاس

سیالکوٹ کوٹلی لوہاراں میں مسجد محمدی اہل حدیث‘ مولانا مزمل الدین‘ مفتی کفایت اللہ شاکر‘ قاری الیاس‘ ڈاکٹر انصر جاوید گھمن اور قاری عتیق الرحمن عاصم سے ملاقات کی۔ مغرب کی نماز شیخ عتیق الرحمن کی مسجد میں پڑھی‘ عشاء کی نماز مسجد عیدگاہ میں اور درس قرآن ہوا۔

قصور کے دورہ کے لیے نکلے‘ بھائی پھیرو میں میٹنگ ہوئی۔ اساتذہ جمع تھے‘ لاک ڈاؤن کی وجہ سے سکولوں کا بند ہونا‘ پرائیویٹ اساتذہ پر ظلم قرار دیا۔ وہاں سے پتوکی روانگی ہوئی‘ عبدالباری ذوق‘ فاروق احمد شیخ نے استقبال کیا‘ پھر مولانا حسن محمود کمیر پوری کے ہاں گئے انہوں نے اپنے والد گرامی حافظ ابراہیم کمیرپوریa کی کتابیں تحفہ میں دیں۔ وہاں پر تحصیل پتوکی کا کامیاب ترین اجلاس ہوا۔ نامزدگیاں کی گئیں‘ ہر مہینے میٹنگ کا پروگرام بنا۔

وہاں سے چھانگا مانگا پہنچے۔ خلیل الرحمن ثاقب سے ملاقات ہوئی‘ گورنمنٹ ہائی سکول کے ہیڈ ماسٹر سے بھی ملاقات رہی۔ وہاں سے روانہ ہوئے‘ ظہر کی نماز چونیاں مرکزی مسجد مبارک میں پڑھی۔ شیخ خالد‘ عبداللہ صاحب‘ فیض اللہ خاں غوری اور ظفر عباس صاحب موجود تھے۔ شیخ خالد کے گھر پر تکلف ظہرانہ کا انتظام تھا۔ سیف اللہ طیب بھی ہمراہ تھے۔ عصر کی نماز چونیاں میں مسجد اقصیٰ میں پڑھی۔ بعد میں میٹنگ ہوئی جس میں ۷۰ اساتذہ نے شرکت کی۔ مسجد کے صدر اور خطیب مولانا فیصل عثمان کی خصوصی شرکت اور تعاون حاصل رہا۔ مغرب کے وقت کھڈیاں پہنچے‘ عشاء کی نماز قصور شہر مسجد المنیرہ میں ہوئی۔ جہاں میں مہینے میں دو خطبات جمعہ دیتا ہوں۔ وہاں سے ماسٹر نذیر احمد‘ دوسرے خطیب مولانا محمد سلیم عاصم‘ قاری صدیق بلوچ‘ احمد قمر کے ہمراہ شہر کی کابینہ کا بھی اجلاس ہوا۔ وہاں سے فارغ ہو کے دو بجے رات گھر پہنچے۔

یہ پڑھیں:   خیبر پختونخواہ ... صوبائی مجلس شوریٰ کا اجلاس

اگلی صبح ۶ بجے اوکاڑہ پروفیسر عطاء الرحمن کے پاس پہنچے‘ اوکاڑہ کی تنظیم کا بہترین کام دیکھ کر دل بہت خوش ہوا۔ تحصیل اوکاڑہ کی میٹنگ بھی ہوئی۔ ظہر کے وقت چیچہ وطنی پہنچے وہاں عتیق الرحمن عزیز اور ضلع کے صدر مولانا یوسف گوہر سے ملاقات ہوئی۔ پھر ساہیوال میں عصر کی نماز مسجد سلمان میں پڑھی۔ قاری اظہار احمد بلوچ‘ قاری شبیر انجم اور عبدالقیوم صابر بھی موجود تھے۔ عبدالجبار زاہد اور قاری امجد فاروق عدیل اور مقامی انتظامیہ حافظ افضل طور سے خاص طور پر ملاقات ہوئی۔

بہاولنگر ۳۰:۵ بجے شام پہنچے۔ اساتذہ کرام موجود تھے۔ رفیق بھٹی صاحب سے ملاقات ہوئی‘ پھر حافظ والہ ضلع بہاولنگر میں پروفیسر عبدالرحمن شارق کے مرکز پر انہوں نے پر تکلف کھانا کھلایا۔ تمام تحصیلوں‘ منچن آباد‘ ہارون آباد‘ چشتیاں اور فورٹ عباس سے لوگ آئے ہوئے تھے۔

ضلع ننکانہ کے دورہ میں موڑ کھنڈا پہنچے‘ وہاں عطاء الرحمن ثاقب ASF کے اویس اکبر اور مولانا عبدالواحد کے صاحبزادہ سے ملاقات ہوئی۔ وہاں سے منڈی واربرٹن مسجد ناران میں مولانا اعظم ساجد اور دیگر اساتذہ کرام شفیع رندھاوا‘ عمر فاروق اور تحصیل ننکانہ کے دیگر اساتذہ سے ملاقات ہوئی۔ وہاں سے فیروز وٹواں پروفیسر عبدالرحیم اشرف سے ملاقات ہوئی۔ عصر کی نماز کے وقت شاہکوٹ پہنچے۔ ذوالفقار بھٹی سے ملاقات اور ان کے ساتھ سانگلہ ہل روانگی ہوئی۔ باغ والی مسجد میں اجلاس ہوا‘ سانگلہ کی باڈی بنائی اور واپسی ہوئی۔

یہ پڑھیں:    کشمیری رہنما عبداللہ غزالی کی شہادت پر یوم احتجاج

گوجرانوالہ غیر رسمی دورہ ڈاکٹر عبدالغفور راشد صاحب کے ساتھ محترم بشیر انصاریa کے گھر گئے۔ ان کے بیٹوں سے تعزیت کی۔ شہر کے لوگ بھی تھے‘ حافظ فیصل افضل شیخ صدر AYF پاکستان بھی تھے۔ راستے میں بھر پور مشاورت بھی رہی۔ عصر کی نماز جہلم جامعہ اثریہ حافظ عبدالحمید عامر کے پاس پہنچے۔ ان کی گرفتاری کی مذمت کی۔ سعد محمد مدنی‘ حافظ عبدالغفور جہلمی‘ نوید احمد بشار کی بھر پور جماعتی شرکت اور گفتگو رہی۔ واپسی پر وزیر آباد ٹھہرے‘ گوہر مستجاب‘ احسان اللہ چیمہ اور حافظ سیف الرحمن بٹ بھی تھے۔ وہاں پر ڈاکٹر عبدالغفور راشد کی محبتوں اور رہنمائی میں واپس پہنچے۔

۱۸ ستمبر کو نواں لاہور گوجرہ ضلع ٹوبہ ٹیک سنگھ میں خطبہ جمعہ انجام بالخیر کے موضوع پر ہوا۔ رانا نعیم سجاد‘ محمد بلال مغل‘ میاں محمد افضل کی خصوصی شرکت۔ پر تکلف ظہرانہ دیا گیا۔

بعد از نماز عصر پروگرام جامع مسجد قباء میں پروفیسر حافظ محمد اقبال کی خصوصی شرکت‘ ضلعی اور تحصیلی ذمہ داران کے ضلع ٹوبہ ٹیک سنگھ‘ مولانا عبدالقادر عثمان نائب صدر‘ میاں محمد افضل۔

۲۰ ستمبر ناشتے پر میٹنگ بدوملہی‘ تحصیل نارووال کے جمعیۃ اساتذہ کا ایجنڈا اور میں ڈویژنل کانفرنس کرنے کے بارے مشاورت ہوئی۔ چوہدری بشیر احمد ملہی اور دیگر اساتذہ کرام کی کثیر تعداد مولانا نور اللہ واثق‘ پروفیسر عبدالقیوم‘ اسماعیل سجاد‘ مولانا محمد نعیم مجاہد کی خصوصی شرکت۔

ظفروال الحرمین مرکز میں مرکز کے ۵۰ کے قریب اساتذہ کی شرکت‘ معلم کی ذمہ داریوں کے حوالے سے تفصیلی خطاب کیا۔ مولانا عبدالغفار ریحان کی رہائش گاہ پر پر تکلف عصرانہ ہوا۔

یہ پڑھیں:    منزل کی تمنا ہے تو کر جہد مسلسل

انتھک محنتی چوہدری منور کاہلوں‘ جامعہ کے طلبہ اور اساتذہ کا خصوصی استقبال‘ حافظ صاحب کا شہر میں مرکز دیکھا اور یہ دورہ ضلع نارووال کا کامیاب ہوا اور وہاں سے واپسی ہوئی۔


درس بخاری شریف


دینی مدارس کے طلبہ کے لیے انتہائی مفید


No comments:

Post a Comment

Pages