محبت صحابہ واہل بیت ریلی فیصل آباد ... لمحہ بلمحہ 20-24 - ھفت روزہ اھل حدیث

تازہ ترین

Friday, October 30, 2020

محبت صحابہ واہل بیت ریلی فیصل آباد ... لمحہ بلمحہ 20-24

ھفت روزہ اھل حدیث, ہفت روزہ اہل حدیث, اھلحدیث, اہلحدیث, اہل حدیث, اھل حدیث, محبت صحابہ واہل بیت ریلی فیصل آباد ... لمحہ بلمحہ
 

محبت صحابہ واہل بیت ریلی فیصل آباد ... لمحہ بلمحہ

 

رپورٹ: جناب حافظ خالد محمود اعظم آبادی

۲ اکتوبربروز جمعتہ المبارک بعد نماز جمعہ مرکزی جامع مسجد اہلحدیث امین پور بازار سے قائد ملت سلفیہ سینیٹر پروفیسر ساجد میر امیر مرکزی جمعیت اہلحدیث پاکستان کی قیادت میں ریلی کا آغاز ہوا۔مرکزی نائب امیر مولانا محمد یوسف انور‘ صوبائی امیر مولانا عبدالرشید حجازی‘ پرنسپل جامعہ سلفیہ پروفیسر محمد یٰسین ظفر‘ قاری محمد ارشد‘ حافظ حبیب الرحمان‘ خالد محمود اعظم آبادی‘ شیخ سلیم الرحمان‘ پروفیسر امین الرحمان ساجد‘ حافظ عبدالغفار مکی‘ حافظ جہانگیر‘ حافظ عمر فاروق ارشد‘ مہر محمد عبداللہ‘ چیئرمین عطا الرحمن‘ حافظ محمد احسان ‘حافظ عبدالرحمن عابد ‘احسان الحق ودیگر بھی ریلی کے ہمراہ تھے۔

یہ پڑھیں:            تحفظ شعائر اسلام سیمینار

ریلی میں مرکزی جمعیت اہلحدیث واہلحدیث یوتھ فورس سٹی وضلع کے رہنماں سمیت ذیلی تنظیموں کے ذمہ داران وکارکنان کثیر تعداد میں موجود تھے۔ریلی میں شریک نوجوان‘ بوڑھوں اور بچوں کا جذبہ دیدنی تھا جوکہ محبت صحابہ اہلبیت میں مر مٹنے کے فلک شگاف نعرے لگا رہے تھے۔ انہوں نے سینکڑوں کی تعداد میں جھنڈے بینرز اور پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے جن پر مختلف نعرے درج تھے۔شرکا مرکزی جمعیت اہلحدیث واہلحدیث یوتھ فورس زندہ باد کے نعروں سمیت تیرا امیر میرا امیر ساجد میر ساجد میر کے نعرے لگا رہے تھے۔ریلی امین پور بازار سے شروع ہوکر علامہ اقبال روڈ‘ سرکلر روڈ‘ کچہری چوک سے ہوتی ہوئی گھنٹہ گھر چوک پہنچی تو وہاں اسٹیج سے شرکا ریلی اور امیر محترم کا بھر پور نعروں سے استقبال کیا گیا۔ ریلی میں  ہزاروں افراد شریک تھے۔فیصل آباد کی تاریخ کی سب سے بڑی ریلی الحمد اللہ مرکزی جمعیت اہلحدیث واہلحدیث یوتھ فورس فیصل آباد کے عہدیداران وکارکنان کی دن رات کی محنت اور اللہ رب العزت کی خاص مہربانی سے بھر پور کامیابی سے اختتام کو پہنچی۔

چوک گھنٹہ گھر میں ریلی کے شرکا سے خطاب کرتے ہوئے مرکزی امیر سینٹر حافظ پروفیسر علامہ ساجد میر نے کہا ہے کہ ’’ہم اس ریلی میں کسی سے لڑنے نہیں آئے ہم کسی کے خلاف کوئی فتویٰ دینے نہیں آئے ہم۔صرف پاک اصحاب رسول اور رسول اللہ e کی ناموس کی حفاظت کے لئے آئیے ہیں ہم ملک میں صحابہ کی توہین کسی قیمت پر نہیں چاہتے ہم اصحاب رسولe کی توہین کسی قیمت پر نہیں ہونے دیں گے اگر ملک میں امن وامان چاہتے ہیں تو اصحاب رسول کی توہین بند کرنا ہوگی ورنہ ملک کے امن کی کوئی ضمانت نہیں۔صحابہ کی توہین کرنے والوں پر سے پابندی اٹھانے والوں اور اور ان کو بھگا نے والوں کو پہلے حکومتی عہدوں سے ہٹایا جائے سہولت کاروں کو سزا دی جائے ۔اصحاب رسول کی توہین کرنے والوں کی زبانیں کاٹی جائیں اصحاب رسول eاور اہلبیت کی عزت اس ملک میں محفوظ نہیں تو امن بھی محفوظ نہیں ہوگا۔‘‘

یہ پڑھیں:            مرکزی وصوبائی قیادت کا دورۂ ساہیوال سٹی

مولانا عبدالرشید حجازی نے کہا کہ ’’اصحاب رسول eسے محبت ہمارا ایمان ہے ہم ملک عزیز سے فرقہ واریت کا خاتمہ چاہتے ہیں اور فرقہ بندی پنپنے نہیں دیں گے اور جنہوں نے فرقہ واریت کو ہوا دی ہے ان کو نکیل ڈالی جائے ورنہ اصحاب رسول eسے محبت کرنے والے فرقہ واریت کو ختم کرنے اور ملک کا امن وامان کو قائم رکھنے کے لئے کسی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے۔ ہم فرقہ واریت کی طرف نہیں آنا چاہتے نہ ہم کو لایا جائے حضرت ابوبکر صدیق﷜ کی صداقت کی طرف اٹھنے والی ہر انگلی کاٹ دیں گے۔‘‘

پروفیسر یٰسین ظفرنے کہا کہ ’’آج کی ریلی کسی مسلک کے خلاف نہیں بلکہ صحابہ کے ناموس پر بولنے والوں اور امن وامان کو خراب کرنے والوں کے خلاف ہے۔‘‘

پروفیسر نجیب اللہ طارق نے کہا کہ ’’جو شخص صحابہ کا دشمن ہے ہم اس کے دشمن ہیں اور جو صحابہ سے محبت کرتا ہے ہم اس سے محبت کریں گے۔‘‘

قاری احمد حسن ساجد نے کہا کہ ’’آج کی ریلی دفاع صحابہ اور ناموس صحابہ کی ریلی ہے ہم اس ریلی سے صرف مقتدر حلقوں تک یہ پیغام دینا چاہتے ہیں کہ ملک کی سا  لمیت اور امن وامان سے کھیلنے والوں کو بے نقاب کیاجائے کہ کون لوگ ملک دشمن عناصر کے ہاتھوں میں کھیل رہے ہیں۔‘‘

اہل حدیث یوتھ فورس پنجاب کے سیکرٹری حافظ محمد قسیم نے کہا کہ ’’صحابہ کو گالیاں دینا، بھلا کہنا یہودیوں کا کام ہے یوتھ فورس کے نوجوان یہودیوں کے پیروکاروں کا ڈٹ کر مقابلہ کریں گے اور دشمن صحابہ کے عزائم بے نقاب کرتے رہیں گے۔‘‘

معروف خطیب مولانا محمد ناصر مدنی نے کہا کہ ’’ہم پاکستان کے سب لوگوں سے اپیل کرتے ہیں کہ پاکستان کے امن سے نہ کھیلا جائے۔ ہم امن پسند لوگ ہیں اور امن کا دامن ہاتھ سے نہیں چھوڑیں گے۔‘‘

مولانا عبداللہ شیخوپوری نے کہا کہ ’’عظمت صحابہ کے دفاع کے لئے کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے ہم ناموس صحابہ کے پاسبان ہیں۔‘‘

یہ پڑھیں:            منزل کی تمنا ہے تو کر جہد مسلسل

اس موقع پرقاری حنیف بھٹی، حافظ مسعود عالم، حاجی بشیر احمد انصاف والے،مفتی محمد نصر اللہ عزیز، قاری محمد ارشد، مولانا عبدالصمد معاذ،مہر محمد عبد اللہ اینڈ برادرز، پروفیسر امین الرحمن ساجد، مولانا عبد المنان نور پوری، پروفیسر حافظ سعید احمد چنیوٹی، خالد محمود اعظم آبادی، محمد یاسر بٹ، محمد انور نعیم، حافط عبدالغفار مکی، حافظ ابو بکر پٹوی، حافظ عمر فاروق ارشد، ابوبکر جمیل، حکیم محمد بلال ثاقب، مولانا محمد سردار عابد‘ سعید احمد انصاری‘ شیخ سلیم الرحمن‘ چوہدری عمر فاروق گجر‘ مولانا عبدالرشید ضیاء‘ رانا محمد افضل‘ حافظ عمران بھٹی‘ حافظ شاہد اشرف‘ حافظ محمد اسلم جٹ‘ چاچا عبدالرشید‘ حافظ حبیب الرحمن‘ قاری بشیر احمد عزیزی‘ حافظ ایوب صابر‘ سید عبدالستار شاہ ‘حافظ عمر ایوب‘ حافظ جہانگیر جامعہ سلفیہ‘ قاری عطاء الرحمان راشد‘ حافظ عبدالماجد معاذ‘ محمد مجاہد علوی ‘ عبدالحفیظ انور‘ محمد خبیب عظیم انصاری‘ ثناء اللہ کمبوہ‘ افتخار احمد فراز ‘قاری عمران سلفی ‘مولانا محمد حنیف عاجز ‘ حافظ‘ حافظ محمد سفیان‘ مختار احمد سلفی‘ حسن سردار گجر ودیگر سٹیج پر موجود تھے۔

ریلی بلاشبہ فیصل آباد کی سیاسی ومذہبی تاریخ کی سب سے بڑی ریلی تھی۔جس میں ہزاروں کی تعداد میں افراد شریک تھے ریلی کی کامیابی کیلئے جہاں مرکزی جمعیت اہلحدیث واہلحدیث یوتھ سٹی فیصل آباد ودیگر ذیلی تنظیموں نے دن رات محنت کی تھی وہاں پر مرکزی جمعیت اہلحدیث پاکستان کے صوبائی وضلعی امیر مولانا عبدالرشید حجازی‘ ضلعی ناظم قاری محمد ارشد‘ پروفیسر نجیب اللہ طارق‘ مہر محمد عبداللہ اینڈ برادرز ودیگر سب متحرک تھے مولانا عبدالرشید حجازی ریلی کے آخری ایام میں فیصل آباد کے ہی ہوکر رہ گئے تھے‘ وہ دن رات ریلی کی کامیابی کیلئے روابط میں مصروف تھے ریلی میں فیصل آباد سٹی وحلقہ جاتی ذمہ داران کیساتھ ہر فرد نے اپنا اپنا حصہ ڈالا‘ جمعہ کے بعد تمام بڑی مساجد سے خطبا حضرات اپنے اپنے رفقا کو جلوس کی شکل میں لیکر چوک گھنٹہ گھر پہنچے اس طرح ضلع بھر کی تمام تحصیلوں سے بڑے بڑے جلوس بھی امیر محترم کے جمعتہ المبارک کے اجتماع اور ریلی میں شامل ہونے کیلئے دوپہر ۱۲ بجے ہی امین پوربازار میں پہنچ چکے تھے۔

جڑانوالہ سے حافظ ابوبکر پٹوی ضلعی صدر AYF'میاں اطہر محمود‘ ڈاکٹر طارق عباس چوہدری‘ ملک سکندر حیات ذکی‘ سمندری سے ضلعی ناظم مالیات مرکزیہ چوہدری عمر فاروق گجر‘ رانا ثنا اللہ خاں اسد‘ حکیم عبدالحفیظ تبسم‘ حافظ نثار احمد‘ مرزا سعود‘ تاندلیانوالہ سے قاری بشیر احمد عزیزی‘ چوہدری حنظلہ طور‘ ڈجکوٹ سے مولانا محمد یونس‘ ملک عبدالرشید‘ کھرڑیانوالہ سے مولانا محمد اشرف جاوید‘ تحصیل فیصل آباد سے سب سے زیادہ افراد ریلی میں شریک ہوئے تمام تھانہ جات سے شرکا قاری محمد ارشد‘ سعید احمد انصاری‘ مولانا محمد اسحاق سلفی‘ مولانا محمد سلیم ساجد‘ مولانا امتیاز احمد سلفی‘ بشیر احمد صدیقی‘ ڈاکٹر عبدالرحمان انصاری‘ حبیب الرحمان ساجد‘ افتخاراحمد فراز‘ حاجی محمد یٰسین انصاری‘ رانا کلیم اللہ‘ قاری محمد ہاشم رحیم‘ رانا محمد خاں‘ مولانا محمد ارشاد‘ حافظ محمد راشد‘ اشفاق احمد چیمہ‘ غلام مصطفی مغل‘ حافظ عمر فاروق ارشد‘ حبیب الرحمان بٹ‘ حماد نصیر ودیگر کی قیادت میں ریلی میں شریک ہوئے۔

یہ پڑھیں:            جاگ اُٹھے ہیں دیوانے

ریلی کی کامیابی کیلئے جہاں قائدین دن رات کوشش کررہے تھے اسکو کامیاب بنانے کیلئے الائیڈ ہاسنگ گروپ کے روح رواں مہر محمد عبداللہ اینڈ برادرز کا کردار بھی کسی سے کم نہیں جنہوں نے ضلع بھر میں ٹرانسپورٹ کا انتظام کرنے کیساتھ ساتھ شرکا ریلی کیلئے کھانے کا بندوبست کیا ۔اللہ سے دعا ہے کہ اللہ رب العزت انہیں دنیا وآخرت میں اسکا بہترین بدلہ عطا فرمائیں۔ آمین!

ریلی کی بے مثال کامیابی پر مرکزی جمعیت اہلحدیث واہلحدیث یوتھ فورس‘ اہلحدیث سٹوڈنٹس فیڈریشن‘ جمعیت طلبہ اہلحدیث کے سٹی ضلع وتحصیلوں کے ذمہ داران سمیت حلقہ جاتی وتھانہ جاتی عہدیداران سمیت ریلی میں شریک ہر فرد کو مبارکباد پیش کی جاتی ہے۔


No comments:

Post a Comment

Pages