فرانسیسی صدر نے دنیا کو تباہی کے گڑھے پر لا کھڑا کیا 20-27 - ھفت روزہ اھل حدیث

تازہ ترین

Friday, November 27, 2020

فرانسیسی صدر نے دنیا کو تباہی کے گڑھے پر لا کھڑا کیا 20-27

ھفت روزہ, ہفت روزہ, اھل حدیث, اہل حدیث, اھلحدیث, اہلحدیث, فرانسیسی صدر نے دنیا کو تباہی کے گڑھے پر لا کھڑا کیا,
 

فرانسیسی صدر نے دنیا کو تباہی کے گڑھے پر لا کھڑا کیا

 

مرکزی جمعیت اہل حدیث برطانیہ کی مجلس نظامت کا آن لائن اجلاس

بریڈفورڈ (پ۔ر) مرکزی جمعیت اہل حدیث برطانیہ کی مجلس نظامت کا آن لائن اجلاس گزشتہ شب زیر صدارت امیر مولانا محمد ابراہیم میرپوری منعقد ہوا‘ ناظم اعلی حافظ حبیب الرحمن حبیب نے فرانسیسی صدر عمانویل میکرون کی جانب سے اسلام اور نبی اسلامe کی ذاتِ اقدس کے بارے میں توہین آمیز اور گستاخانہ خاکوں کی اشاعت جاری رکھنے کی اجازت دینے اور فرانس میں مسلمانوں پر عرصہ حیات تنگ کرنے کے اقدامات بعض مساجد بند کرنے کے مذموم اعلان پر گہرے رنج و کرب کا اظہار کرتے ہوئے شدید مذمت کی اور اس سلسلہ میں جمعیت کیا کردار ادا کرسکتی ہے اس پر تمام اراکین کو اظہار خیال کی دعوت دی۔

یہ پڑھیں:   تحریک عظمت صحابہ واہل بیت مرکزی جمعیت اہل حدیث گوجرانوالہ

مولانا عبدالہادی العمری نے کہا کہ ’’یہ ناپاک جسارت کوئی نئی نہیں ہے لیکن اسے کسی بھی صورت میں برداشت نہیں کیا جاسکتا کیونکہ یہ ہمارے ایمان کی پہلی سیڑھی ہے اس سلسلہ میں ہمیں رحمت کائنات کی شخصیت اور پیغام کوعام کرنے کی کوششیں بھی کرنا ہوں گی۔‘‘

مدیر مسئول ماہانہ ’’صراط مستقیم‘‘ مولانا حفیظ اللہ خان مدنی نے کہا کہ ’’جماعت کو فوری طور پر ایسا لٹریچر وسیع پیمانے پر پھیلانے کا اہتمام کرنا ہوگا جو نبی کائنات کے بارے میں صحیح راستے کواجاگرکرے تاکہ ہم اسلام کی دعوت غیر مسلموں تک پہنچاسکیں۔‘‘

مولانا محمد شعیب میرپوری نے کہا کہ ’’فرانسیسی حکمران نے توہین آمیز خاکوں سے مجروح ہونے والے دلوں پر مرہم رکھنے کی بجائے شدت پسندوں کو اسلام پر حملہ کرنے اور اسلامو فوبیا کی حوصلہ افزائی کی ہے اور مذہبی منافرت پھیلانے، اسلام دشمنی میں مزید اضافہ کرنے اور دہشت گردی اور انتہا پسندی کو ہوا دینے کی راہ چنی ہے، اِس سے عالمی معاشرہ مزید تقسیم ہوگا جس کی دنیا متحمل نہیں ہو سکتی۔‘‘

ناظم نشرو اشاعت مولانا عبدالاعلیٰ درانی نے کہا کہ ’’ہم اپنی بساط کے مطابق فرانسیسی صدر کے اس اقدام کو مسترد کریں گے۔ اپنی جماعتی برانچوں کے متعلقین سے درخواست کریں گے کہ وہ اپنے اپنے مقامی ایم پیز سے ملاقات کرکے مسلمانوں کے جذبات ان تک پہنچائیں گے۔ اسی طرح فرانسیسی سفارتخانے کو بھی لکھیں گے‘ دنیا میں احتجاج کا سب سے مؤثر ترین ہتھیار سوشل میڈیا کے ذریعے سیرت نبی کائنات کے مختلف پہلوؤں کو اجاگر کرنا ہے۔ فرانسیسی صدر کو باقاعدہ خط لکھا جائے اور اسے سیرت مصطفوی کا مطالعہ کرنے کی دعوت بھی دی جائے کیونکہ دنیا حضور سے متعارف ہونا چاہتی ہے تو ہم کیوں نہ اس موقع سے فائدہ اٹھائیں۔جب بھی ہمارے پیغمبرe کی شان میں کہیں گستاخی کی جاتی ہے تو مسلمانوں کو انتہائی درد اور تکلیف ہوتی ہے۔ اِن ملکوں میں اسلام دشمنی تیزی سے پھیل رہی ہے۔ مسلمانوں کی مذہبی اقدار، شعائر، روایات اور رسومات پر رکیک حملے کئے جا رہے ہیں، کہیں نبی آخرالزماںﷺ، کہیں صحابہ کرام] ایسی محترم شخصیات کی توہین و تضحیک اور کہیں قرآن پاک کی بے حرمتی کی جاتی ہے۔ حجاب سمیت اسلامی لباس پہننے سے جبراً روکا جاتا ہے۔ مساجد میں نمازیوں پر حملے کئے جاتے ہیں۔ فرانس اور کئی دوسرے ملکوں میں اسلام کو دہشت گردی سے جوڑا جا رہا ہے اور اِس حوالے سے مسلمانوں کو نفرت اور جبر و تشدد کا نشانہ بنایا جاتا ہے۔‘‘

یہ پڑھیں:   اجلاس جمعیۃ اساتذہ وسطی پنجاب

انہوں نے مزید گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ’’بھارت میں ہندو ازم کے نفاذ کیلئے مسلمانوں کی نسل کشی ہو رہی ہے۔ مسلم اکثریتی ریاست مقبوضہ کشمیر کو زبردستی ضم کرکے وہاں مسلمانوں کا نام و نشان مٹایا جا رہا ہے، مغربی ملکوں کے اخبارات و جرائد میں اسلام مخالف مواد کی تشہیر ایک عرصہ سے جاری ہے پہلے گستاخانہ خاکے صرف شائع کئے جاتے تھے، اب اُنہیں اشتہارات کی صورت میں سرکاری عمارات پر بھی چسپاں کیا جا رہا ہے۔‘‘

قاری ذکا اللہ سلیم نے کہا کہ ’’ایک مسلمان اہانت رسالت کسی بھی صورت میں برداشت نہیں کرسکتا پیرس کے چارلی ہیبڈو میگزین کے دفتر پر چار پانچ سال پہلے حملہ بھی ہو چکا ہے جس میں میگزین کے عملے سمیت ۱۲ افراد مارے گئے تھے۔ دنیا اس وقت کئی حوالوں سے بارود کے ڈھیر پر کھڑی ہے۔ عالمی امن انتہائی خطرے میں ہے، اِس صورتحال میں اسلامو فوبیا روکنے کی ضرورت ہے دنیا کو مفاہمت اور بھائی چارے کو فروغ دینا چاہئے۔‘‘

حافظ عبدالباسط العمری  نے کہا کہ ’’عالمی امن کیلئے باہمی تعاون اور ہم آہنگی بنیادی شرط ہے احتجاج کے روایتی طریقوں کی بجائے مؤثر طریقے سے احتجاج ریکارڈ کروایاجائے اور ساتھ ساتھ اسلام کی دعوت بھی دی جائے‘ جماعتی ویب سائٹ پر سیرت اقدس کی تازہ ترین کتاب اَپ لوڈ کی جائے تاکہ عام لوگوں کو بھی سیرت اقدس تک رسائی ہوسکے۔‘‘

حافظ شریف اللہ شاہد نے کہا کہ ’’حضور نبی کریم دنیا کی سب سے محترم شخصیت ہیں سوشل میڈیا پر سے آنحضور اور اسلام کے بارے منفی مواد ہٹانے کے لیے فیس بک کے بانی اور دیگر میڈیا سے رابطہ کیا جائے اور سب باقی دینی جماعتوں کے ساتھ مل کر اپنے احتجاج کو مؤثر کیا جاسکتا ہے۔‘‘

یہ پڑھیں:   شعبہ تبلیغ مرکزی جمعیت اہل حدیث کے زیر اہتمام دورہ ہزارہ ڈویژن

ناظم اعلیٰ برطانیہ حافظ حبیب الرحمن حبیب نے تمام اراکین کی تجاویز کا خلاصہ بیان کرتے ہوئے فیصلہ کیا کہ ’’ویب سائٹ پر اشاعتی مہم تیز تر کی جائیگی اور اس سلسلہ میں تمام اخراجات جمعیت اپنے طور پر برداشت کرے گی فرانسیسی سفارت خانے اور صدر فرانس کو فوری طور خط لکھا جائے گا اور مسلم حکمرانوں کو فرانسیسی مصنوعات کے بائیکاٹ اور سفارتی دباؤ استعمال کرنے کا مشورہ دیا جائے اسی طرح باقی سب دینی جماعتوں کو احتجاج میں شریک کرنے کا بھی مشورہ طے کیا ۔‘‘


No comments:

Post a Comment

Pages